سیرت النبی صلی اللہ علیہ وسلم

ڈاکٹرسلیس سلطانہ 

دنیا میں انسان کا امتیاز و امتحان یہی ہے کہ اس کو آزادی اور اختیار کا عطیہ دیا گیا ہے۔ اس کو نیکی اور بدی

کی پہچان دی گئی ہے، اور وہ ان میں سے جس کو چاہے اپنا سکتا ہے۔ شکر کا راستہ اس کو اخلاق کی انتہائی معراج تک پہنچا دیتا ہے، کفر کا راستہ اختیار کرکے وہ پستی میں جا گرتا ہے۔ اللہ تعالیٰ نے انسان کو ارادہ اور فکر و عمل کی آزادی دے کراسے اس کے حال پر نہیں چھوڑا بلکہ اپنے نبیوں، پیغمبروں اور رسولوں کے ذریعے اس کو صراطِ مستقیم دکھاتا رہا۔ نبی آخر الزماں سید المرسلین حضرت محمد مصطفی صلی اللہ علیہ وسلم دنیا کی وہ کامل ترین شخصیت ہیں جن کی مثال قیامت تک ملنی ناممکن ہے۔ آپؐ کا خاندان عرب کا سب سے معزز خاندان تھا اور کعبہ کے متولی ہونے کی وجہ سے اس کو معاشرتی اور مذہبی فوقیت حاصل تھی۔ آپؐ کے والد آپؐ کی پیدائش سے چند ماہ قبل ہی انتقال کرچکے تھے۔ چھ سال کی عمر میں والدہ کا ساتھ بھی چھوٹ گیا۔ اب آپؐ کی پرورش کی ذمہ داری دادا کے سپرد تھی، لیکن یہ ولایت دو سال ہی رہی اور دادا کا سایہ بھی سر سے اٹھ گیا۔ قدرت کو صرف یہ دکھانا مقصود تھا کہ اس کے پالنے والے اس کے رشتے دار، عزیز و اقارب نہیں بلکہ قدرتِ الٰہی ہے۔ چچا ابو طالب کثیر اولاد رکھتے تھے مگر انہوں نے سرپرستی کا فرض اپنے ذمے لے لیا۔ آپؐ نے تجارت کے سلسلے میں چچا کے ساتھ شام کے کئی سفر کیے۔ دل کی آنکھیں تو قدرت نے ابتدا سے ہی روشن کردی تھیں، ظاہر آنکھوں سے انسان کی گمراہی اور زوال کو دیکھ کر دلی تکلیف ہوئی اور وہ سوچ بیدار ہوئی جو معلمینِ اخلاق اور انسان کے ہادیوں کے حصے میں آتی ہے کہ انسان کی زندگی میں کس طرح پاکیزگی اور شرافت پیدا کی جائے۔
آپؐ کے لیے یہ زمانہ سیرت کے نقوش کی تیاری اور تربیت کا تھا۔ دنیا کو دیکھنے اور برتنے کا۔ اس لیے آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے تجارت کا پیشہ اختیار فرمایا۔ نوجوانی ہی میں آپؐ کی دیانت، امانت اور صداقت کا شہرہ پھیل چکا تھا۔ اس شہرت سے متاثر ہوکر عرب کی ایک شریف بیوہ خاتون نے اپنی تجارت کا انتظام نبی اکرم صلی اللہ علیہ وسلم کے سپرد کردیا۔ آپؐ نے یہ فرض اتنی ایمان داری، سلیقے اور دیانت کے ساتھ انجام دیا کہ ان محترم خاتون بی بی خدیجہؓ نے اپنی طرف سے شادی کی خواہش کا اظہار کیا، اور یہ مبارک و مقدس رشتہ حضرت خدیجۃ الکبریٰؓ کی وفات تک قائم رہا۔ اس طرح انہیں خاندانی زندگی کے آداب کو برتنے اور دنیا کے سامنے خانگی زندگی کو پیش کرنے کا عملی موقع ملا۔
اطمینان دل کی تسکین اور روح کی مسرت سے حاصل ہوتا ہے جو صرف اور صرف معرفتِ الٰہی اور خدمتِ خلق کی وجہ سے نصیب ہوتا ہے۔ آپؐ معرفتِ الٰہی کی تلاش میں کئی کئی دن غارِ حرا میں مصروفِ عبادت رہتے۔ چالیس سال کی عمر میں جب آپؐ غارِ حرا میں عبادت میں مشغول تھے کہ اس نورِ حقیقت نے آپؐ کے قلبِصافی پر جلوہ کیا اور بشارت دی کہ انہیں اللہ نے اپنا رسول بناکر دنیا میں بھیجا ہے تاکہ بھٹکے ہوئے انسانوں کو ہدایت کا راستہ دکھائیں۔ سورۂ علق کی ابتدائی پانچ آیات پہلی وحی کی صورت میں آپؐ پر نازل ہوئیں ’’(اے رسول) پڑھو اپنے رب کے نام سے جس نے ساری کائنات بنائی ہے، جس نے انسان کو خون کی ایک پھٹکی سے بنایا۔ پڑھو اور تمہارا پروردگار بڑا صاحب ِ کرامت ہے، اسی نے قلم کے ذریعے (انسان کو) علم سکھایا، وہ سب کچھ سکھایا جسے وہ نہ جانتا تھا۔‘‘
یہ بڑا سخت اور مشکل وقت تھا، آپؐ نے چالیس سال اپنی قوم کے سامنے بے داغ و بے لوث زندگی بسر کی تھی۔ اب اسی قوم کو اُن کی گمراہی پر تنبیہ اور سرزنش کرنی تھی۔ گمراہی جس کی جڑیں ان لوگوں کی انفرادی اور اجتماعی زندگی میں شامل ہوگئی تھی، سچ کی خاطر اپنی عمر بھر کی نیک کمائی کو قربان کرکے ہر قسم کی مخالفتوں اور دشمنی کو مول لینا اپنی جان جوکھوں میں ڈالنا تھا۔ آپؐ کو اندازہ تھا کہ آپؐ کے سامنے ایک میدانِ خارزار ہے۔ آپؐ نے حضرت خدیجہؓ سے جو آپؐ کی محرم راز تھیں، اس بات کا تذکرہ کیا۔ وہ اپنے چچا زاد بھائی ورقہ بن نوفل کے پاس لے گئیں جو ایک صاحب ِ بصیرت عیسائی عالم تھے۔ انہوں نے حضرت جبرائیل علیہ السلام کو ناموسِ اکبر کہا اور کہا: ’’بے شک یہ خدا کا پیغام ہے جو آپؐ پر نازل ہوا ہے، یہ وہی پیغام ہے جو آپؐ سے پہلے دوسرے بہت سے نبیوں پر اس ناموسِ اکبر کے ذریعے نازل ہوا۔ میری نظریں اس مستقبل کو دیکھ رہی ہیں جو آپ کا انتظار کر رہا ہے، کاش! میں اُس وقت زندہ ہوتا جب قوم آپؐ کو وطن سے نکال دے گی اور اس وقت آپؐ کی کچھ خدمت کرسکتا۔‘‘
آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے دریافت فرمایا ’’کیا قوم مجھے مکہ سے نکال دے گی؟‘‘ورقہ بن نوفل نے کہا ’’ہاں اس دنیا میں جس کسی نے ایسی انقلابی تعلیم پیش کی ہے اُس کو یہی صورتِ حال پیش آئی ہے، اور ہر قسم کی مخالفتیں جھیلنا پڑی ہیں۔‘‘ آپؐ نے اپنے اطراف پر نظر ڈالی، ہر طرف بت پرستی کا دور دورہ تھا۔ لوگوں نے خدائے واحد کو بھلا کر اپنے ہی ہاتھوں سے بنائے ہوئے معبودوں کی پرستش شروع کردی تھی۔ تباہی و تعصب اپنے شباب پر تھے۔ عرب میں اس وقت کوئی منظم حکومت نہ تھی، نہ قانون کی کارفرمائی، نہ سماج میں انصاف اور مساوات کا احترام تھا۔ سوائے فنِ خطابت، آدابِ شجاعت اور مہمان نوازی کے تہذیب کے کوئی مثبت عناصر باقی نہیں رہے تھے۔ جہالت عام تھی، لوگ بے شمار قبائل میں منقسم تھے جن کے الگ الگ خدا تھے۔ ان قبائل کی آپس کی دشمنی کا یہ حال تھا کہ ذرا سی بات پر لڑائی کی آگ بھڑک اٹھتی اور نسل در نسل بھڑکتی رہتی۔ کشت و خون کا بازار گرم رہتا۔
خانہ کعبہ، جس کو حضرت ابراہیم علیہ السلام نے خدا کا گھر بنایا تھا، تین سو ساٹھ بتوں کا مسکن تھا۔ توحید ِ الٰہی اور انسانی وحدت کا تصور ختم ہوچکا تھا۔
شراب خوری، قمار بازی، بے شرمی کے بے شمار مظاہر ان کی زندگی کا جزو بن گئے تھے اور ہر اعتبار سے تہذیب و تمدن کی بنیاد کھوکھلی ہوچکی تھی۔
رسول اکرمؐ جانتے تھے کہ دلوں اور دماغوںکو بدلنے کے لیے ان کو کس قسم کی جانفشانی سے کام لینا پڑے گا۔ ایک مصلح کو یہ کام محبت، ہمدردی، دل سوزی، صبر اور نفسیاتی سوجھ بوجھ کے ذریعے کرنا پڑتا ہے۔ ابدی صداقت کے حسین چہرے پر سے صدیوں کی جمی ہوئی دھول کو ہٹانا بڑے جان جوکھوں کا کام تھا۔ یہ معاشرے کی پوری قوم کے خلاف فردِ واحد کا جہاد تھا۔ کوئی مصلحت اندیشی اس جذبے کو سرد نہیں کرسکتی تھی۔ خلوص اور ایمان کی بے پناہ قوت نے آپؐ کے اس جذبے کو مہمیز دیے رکھی۔ گلی گلی، کوچے کوچے میں اللہ کی واحدنیت کا پیغام پہنچایا۔ میلوں اور منڈیوں میں جاکر اس پیغام کی اشاعت کی۔ خود بھی زبان سے اقرار کرکے دل سے اس کی تصدیق کی اور عمل سے اس کا اظہار کیا۔ وہی لوگ جو آپؐ کو ’’امین‘‘ اور ’’صادق‘‘ کہتے تھے، انہوں نے آپؐ کے اس پیغام کا مذاق بھی اڑایا اور ہر طرح سے ذہنی اور جسمانی اذیتیں بھی دیں، کیوں کہ وہ زندگی کو عیش و عشرت اور نفس پرستی میں گزارنا چاہتے تھے۔ پیغمبر خدا کی تعلیم و تبلیغ کا سارا زور اخلاق اور شرافت پر تھا۔ آپؐ لوگوں کو وحدانیت کی تعلیم کے ساتھ اللہ کے سامنے اپنے ہر عمل کی جواب دہی کا یقین دلاتے تھے۔ وہ اخوتِ امت اور مساوات کے پیغمبر تھے۔ انسانوں میں افضلیت کا معیار تقویٰ اور پرہیزگاری پر قائم کرتے تھے اور ایک حبشی غلام جو متقی اور پرہیزگار ہو، وہ قریشی سید زادے سے برتر قرار پاتا تھا جو ان صفات سے محروم ہو۔ آپؐ کی صداقت پر ایمان وہی لوگ لائے جو آپؐ کے سب سے زیادہ قریب تھے۔ زوجہ محترمہ حضرت خدیجۃ الکبریٰؓ، نوعمر چچا زاد بھائی علیؓ، آپؐ کے قریبی دوست حضرت ابوبکر صدیقؓ، آپؐ کے متبنیٰ زید بن حارثؓ، ایک حبشی غلام حضرت بلالؓ جو اسلام کے سب سے پہلے مؤذن قرار پائے۔ اہلِ قریش اس تبلیغ سے پریشان ہوکر نئے نئے حربے اختیار کرتے گئے۔ ایک دولت مند سردار عقبہ کو آپؐ کو سمجھانے کے لیے بھیجا گیا۔ اس نے کہا ’’اے میرے عزیز! تم کیوں یہ سب حرکتیں کررہے ہو؟ کیوں ہمارے معبودوں کو نہیں مانتے؟ اور ان کے بجائے ایک اَن دیکھے اور اَن جانے خدا کے وکیل بنے ہوئے ہو؟ کیوں ہمارے پرانے طور طریقوں کو رد کرتے ہو؟ اگر ان تمام باتوں سے تمہارا مقصد مال اور دولت جمع کرنا ہے تو ہم تمہیں تمہاری خواہش سے زیادہ مالامال کردیں گے۔ اگر عزت چاہتے ہو تو اپنا رئیس اور سردار مان لیں گے، اگر حکومت کی آرزو ہے تو تمہیں عرب کا بادشاہ تسلیم کرنے کو تیار ہیں، اگر تمہارا یہ سب دھندا خلل دماغ کا نتیجہ ہے تو ہم تمہارے علاج کا بہترین انتظام کرا دیںگے(بشکریہ جسارت)۔‘‘

شہر شہر کی خبریں

سردیوں میں احتیاط نہ کی جائے تو بچوں کو نمونیہ ہوسکتا ہے:ڈاکٹر سمیع الرحمن

کرا چی ( ملاقات :زین صدیقی )ماہرفیملی فزیشن ڈاکٹرسمیع الرحمن صدیقی نے کہا ہے کہ

... مزید پڑھیے

اے اللہ تیرے یہ سرپھرے بندے ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ تصویر کہانی

کراچی ( زین صدیقی )یہ سائٹ ایریا میں کراچی سرکلر ریلوے کی پٹڑی کی تصویر ہے۔اس

... مزید پڑھیے

الخدمت” آرفن کیئر پروگرام “میں رجسٹرڈ بچوں کی ہیلتھ اسکریننگ

کراچی (نمائندہ رنگ نو )الخدمت ”آرفن کیئر پروگرام“ میں رجسٹرڈ 1137بچوں کی سالانہ ہیلتھ ا سیکریننگ کے

... مزید پڑھیے

تعلیم

بیچلرز آف فائن آرٹس اور بیچلرز آف آرکیٹیکچرز کیلئے داخلہ ٹیسٹ اتوار کو ہوگا (تعلیم)

کراچی(تعلیم ڈیسک)انچارج ڈائریکٹوریٹ آف ایڈمیشنز جامعہ کراچی ڈاکٹر صائمہ اختر کے مطابق شعبہ ویژول

... مزید پڑھیے

کرونا وائرس: پنجاب یونیورسٹی میں تمام ہوسٹلز خالی کرالیے گئے (تعلیم)

 لاہور(تعلیم ڈیسک) لاہور میں کرونا وائرس کی دوسری لہر کے پیش نظر کرونا ایس او پیز پر عملدرآمد کرتے ہوئے

... مزید پڑھیے

دو سالہ ایم اے اور ایم ایس سی کی ڈگری مکمل طور پر ختم کرنے کا فیصلہ (تعلیم)

اسلام آباد(تعلیم ڈیسک،مانیٹرنگ ڈیسک )ملک بھر سے دو سالہ ایم اے اور ایم ایس سی کی

... مزید پڑھیے

کھیل

نیوزی لینڈ نے پاکستانی سکواڈ کو ٹریننگ کی اجازت دینے سے انکار کردیا

کرائسٹ چرچ (اسپورٹس ڈیسک)نیوزی لینڈ حکومت نے پاکستانی سکواڈ کو ٹریننگ کی اجازت دینے

... مزید پڑھیے

نیوزی لینڈ اے اور پاکستان کے درمیان پہلا 4 روزہ کرکٹ میچ منسوخ

کرائسٹ (اسپورٹس ڈیسک) نیوزی لینڈ اے اور پاکستان شاہینز کے درمیان پہلا 4 روزہ کرکٹ میچ منسوخ کردیا گیا۔

... مزید پڑھیے

شاہد آفریدی کا لنکا پریمیئر لیگ ادھوری چھوڑ کر وطن واپسی کا اعلان

کولمبو(اسپورٹس ڈیسک) قومی ٹیم کے سابق کپتان شاہد خان آفریدی نے ذاتی مصروفیت کے باعث لنکا پریمیئر

... مزید پڑھیے

تجارت

ایٹمی بجلی گھر کینوپ ٹو تکمیل کے آخری مراحل میں داخل

کراچی( ویب ڈیسک )کراچی کے ساحل ہاکس بے پر زیر تعمیر دوسرا ایٹمی بجلی گھر کینوپ ٹو

... مزید پڑھیے

سونے کی فی تولہ قیمت میں 1000 روپے اضافہ

کراچی( رنگ نو ڈاٹ کام ) پاکستان بھر سونے قیمت میں 1000 روپےاضافہ کے بعد کی فی تولہ قیمت ایک لاکھ 14 ہزار 100

... مزید پڑھیے

انڈوں کی قیمتیں بھی آسمان پر،190روپے درجن میں فروخت

اسلام آباد (ویب ڈیسک )وفاقی دارالحکومت اسلام آباد میں فی درجن انڈے 190 روپے تک فروخت ہونے لگے۔شہر اقتدار

... مزید پڑھیے

دنیا بھرسے

سی پیک کو سبوتاژ کرنے کی تمام کوششیں و حربے ناکام ہوں گے،چین

بیجنگ (ویب ڈیسک ) چین نے کہا ہے کہ سی پیک کو سبوتاژ کرنے کی تمام کوششیں اور

... مزید پڑھیے

مجموعی طور پر بھارتی معاشرہ نسل اورقوم پرستی کے گرد مرکوزہے،باراک اوبامہ

 واشنگٹن ( ویب ڈیسک ) سابق امریکی صدر باراک ا وبامہ نے اپنی کتاب میں بھارت میں مسلم مخالف انتہا

... مزید پڑھیے

ٹوکیو اولمپکس آئندہ سال جولائی میں کرانے کا اعلان

ٹوکیو ( اسپورٹس ڈیسک) کورونا وائرس کے پیش نظر آئندہ برس بھی اولمپکس کا انعقاد کھٹائی میں پڑنے کا

... مزید پڑھیے

فن و فنکار

مایا علی ہدایتکار شعیب منصور کی آنے والی فلم کا حصہ بن گئیں

لاہور( شوبز ڈیسک )اداکارہ مایا علی معروف ہدایتکار شعیب منصور کی آنے والی فلم کا حصہ بن

... مزید پڑھیے

وائٹننگ مصنوعات کو کبھی بھی پروموٹ نہیں کروں گی،ماہرہ خان

اسلام آباد (شوبز ڈیسک):اداکارہ ماہرہ خان نے کہاکہ وہ کبھی بھی وائٹننگ مصنوعات کو پروموٹ نہیں کریں گی

...

... مزید پڑھیے

مہوش حیات ٹیکنو موبائل کے ماڈل کیمن 16 کی برانڈ ایمبیسیڈر مقرر

اسلام آباد(شوبز ڈیسک)اداکارہ مہوش حیات ٹیکنو موبائل کے ماڈل کیمن 16 کی برانڈ ایمبیسیڈر مقرر ہو گئیں۔

... مزید پڑھیے

دسترخوان

اسپائسی فش اسٹکس

قرة العین
اجزا
مچھلی کے فلے۔۔ 500 گرام

... مزید پڑھیے

کوفتہ ہرا مصالہ پلاﺅ

انتخاب:امِ سعد

:اجزاءکوفتہ کیلئے

... مزید پڑھیے

بلاگ

محمد بخش پولیس کیلئے مثال مگر۔۔۔ (زین صدیقی)

زین صدیقی

محمد بخش برڑو نے جو کیا اس کی توقع بہت کم پو لیس والوں سے رکھی جا سکتی

... مزید پڑھیے

ماں بیٹی کیلئے کچھ کریں (بلاک)

 سپاہی قیصر شبیر

ایک پولیس والا ہونے کے ناطے مجھے کشمور واقعے میں  پولیس کی زبردست کامیابی پر عوام کی طرف سے محبت پیار

... مزید پڑھیے

رضا کار تجھے سلام (زین صدیقی)

زین صدیقی

ملک میں کورونا آیا تو یہ ایک خوفنا ک صورتحال تھی ،یہ صورتحال کسی ایک فرد کے ساتھ درپیش نہیں بلکہ دنیا بھر کے

... مزید پڑھیے