غریبوں کی داد رسی کیجئے!!!

محمد ناصرصدیقی

موسم سارے ہی انسان کے فائدے کے لیے ہیں لیکن کچھ لوگ ایسے بھی ہیںجو کسی موسم سے آپ کو خوش

نظر نہیں آئیں گے۔بارش ہو تو تب بھی وہ برا بھلا کہیں گے۔نہ ہو تب بھی۔خوشی اور شکر ان کی زبان سے آپ کو سننے کے لیے نہیں ملے گا۔آپ کا بھی ایسے افراد سے واسطہ پڑا ہوگا۔دنیا میں کسی بھی چیز کے وجود کا اللہ تبارک وتعالی نے ایک سبب رکھا ہے۔مثلاَ بارش کا ایک سبب اور مقصدہے۔اس سے فائدہ اٹھانا اور نقصان برداشت کرنا انسان کی صلاحیت یا کوتاہی ہو سکتی ہے۔اسی طرح گرمی،سردی ،بہار،خزاں کے اسباب ہیں انہیں برا بھلا کہنا جائز نہیں ہے۔ ایک حدیث قدسی کا مفہوم ہے جس میں نبی صلی اللہ علیہ وسلم کا ارشاد ہے کہ اللہ تعالی فرماتا ہے۔”آدم کابیٹا زمانے کو گالی دیتا ہے، حالانکہ میں زمانہ ہوں، رات ودن کو میں ہی پھیر تا ہوں۔سرد موسم میں دن چھوٹے اور راتیں لمبی ہوجاتی ہیں، سورج کی زمین سے قربت و دوری کے سبب درجہ حرارت کی تبدیل ہوتی ہے جس سے ہوا کے دباؤمیں تبدیلی آتی ہے،ملک عزیز میں موسمِ سرما نومبر سے فروری تک رہتا ہے۔ پاکستان پر اللہ کا خاص احسان ہے کہ اس کے باشندے ایک سال میں چار موسموں گرمی، سردی،بہار اور خزاں سے مستفید ہوتے ہیں۔اللہ تعالیٰ نے موسموں کی تبدیلی میں انسانوں کے لیے بے شمار فوائد کا سامان رکھا ہے۔اس لیے اللہ کا شکر کرتے رہنا چاہیے۔اس وقت سردی کا موسم جوبن پر ہے ،دسمبر تو اس معاملے میں بدنامی کی حد تک مشہور ہے۔شاعر حضرات سرد موسم کو اپنی شاعری سے گرم رکھتے ہیں۔ساغر خیامی کی ایک نظم سے چند اشعار کا انتخاب ہے۔

آگ چھونے سے بھی ہاتھوں میں نمی لگتی تھی

سات کپڑوں میں بھی کپڑوں کی کمی لگتی تھی

کڑکڑاتے ہوئے جاڑوں کی قیامت توبہ

آٹھ دن کر نہ سکے لوگ حجامت توبہ

 سخت سردی کے سبب رنگ تھا محفل کا عجیب

ایک کمبل میں گھسے بیٹھے تھے دس بیس غریب

جس طرح موسم گرما کی آمد پر احتیاطی تدابیر کرنے سے بہت سی بیماریوں سے بچا جا سکتا ہے ایسے ہی سردیوں میں بھی چند احتیاطی تدابیر سے بہت سی بیماریوں سے بچا جا سکتا ہے۔سردی کا شکوہ کرنے کے بجائے گرم کپڑے پہنیں ، خاص کر اپنے بزرگوں اور بچوں کو سردی سے بچائیں ،ورزش کرنے سے بھی سردی میں کمی ہو جاتی ہے اگر زیادہ سردی ہو تو پانی نیم گرم کرکے پیا جائے ،لیکن پیا لازمی جائے۔عام طور پر دیکھا گیا ہے گہ بدلتے موسم میں ڈاکٹر کے کلینک میں نزلہ ،زکام، سردی، بخاد،کھانسی ،گلے میں خراش ،نمونیہ وغیرہ جیسے امراض کے شکار افراد کا رش بڑھ جاتا ہے، جن میں جن میں اکثریت بچوں اور بزرگوں کی ہوتی ہے۔

پاکستان کے بالائی اور میدانی علاقوں میں برف باری اور سرد ہواؤں کا راج ہے ، شمالی علاقہ جات اور بلوچستان میں برفباری جاری ہے۔صاحب ثروت خاندان اور سیاح قیمتی گرم کپڑوں اور خوراک و دیگر وسائل کے ساتھ اس موسم سے لطف اندوز ہورہے ہیں۔کچھ لوگ صرف انتہائی سرد موسم میں سیر و تفریح کے لیے برفباری سے مزین علاقوں کا رخ کرتے ہیں ،کچھ آبشاروں۔سردی کا موسم آتے ہی بازاروں میں گرم کپڑوں کی بھرمار سوئٹر، کوٹ سے دکانیں سجنے لگیں ایک طرف جہاں بہت سے لوگ گرم کپڑوں کی خریداری میں مصروف نظر آتے ہیں تو دوسری طرف بہت بڑی تعداد ایسی ہے جو گرم کپڑوں کی خریداری کرنے سے محروم ہے اور اپنی غربت اور بے بسی پر آنسو بہا رہی ہے کورونا جیسی عالمی وبا، لاک ڈاؤن سے بہت زیادہ لوگ ایسے ہیں جو آج بھی فاقہ کشی کا سامنا کررہے ہیں وہ کیسے اپنے آپ کو سردی سے بچائیں گے، اپنے بچوں کے لیے کیسے گرم کپڑے خریدیں گے چھوٹے کچے گھروں اور جھونپڑیوں میں رہنے والے غریب خاندان ہیٹرچلاسکتے ہیں نہ انگیٹھی،مہنگائی کے باعث لنڈا کے پرانے گرم کپڑے بھی ان کے لیے خریدنا محال ہے۔ بچے اور بزرگ شدید ٹھنڈ کوبرداشت نہیں کر پاتے، سرد موسم میں امراض قلب، کورونا ،نمونیہ و دیگر بیماریوں کی وجہ سے اموات کا تناسب بڑھ جاتاہے۔

ملک کے دور دراز پہاڑی ومیدلانی اور دشوار گزار علاقوں میں جہاں عام طورپر اہل خیر افراد کی رسائی ممکن نہیں ہوتی وہاں الخدمت کے رضا کار منظم طریقے سے مخیر حضرات کے تعاون سے غریب خاندانوں میں گرم کپڑوں کی تقسیم کو ممکن بناتے ہیں ، گزشتہ لاک ڈاؤن ، بارش و سیلاب کی صورتحال میں الخدمت فاؤنڈیشن کے رضاکاروں نے ملک بھر میں غریب خاندانوں کی داد رسی کی وہ اپنی مثال آپ ہے ۔ اس سرد موسم میں بھی الخدمت کے ہزاروں رضاکار مخیر حضرات کے تعاون سے کراچی، اندرون سندھ ، بلوچستان، پنجاب ،خیبرپختونخوا، آزاد کشمیر اور گلگت بلتستان میں جہاں بھی کوئی ضرورت مند ہے انہیں ونٹر پیکج فراہم کررہے ہیں۔وہ برف سے ڈھکے ہوئے پہاڑی سلسلے ہوں یا میدانی علاقے ہوں یا صحرائی الخدمت کے رضاکار ضرورت مندوں کا انتہائی مشکل حالات میں بھی مدد فراہم کرتے ہیں ۔

بعض دولت مند نمود و نمائش کا موقع ہاتھ سے نہیں جانے دیتے ،جس کے پاس دولت ہے وہ گرمیوں میں ایرکنڈیشن کمروں میں رہتا ہے باہر نکل کر اسکی خوبیوں اور اپنی فراوانیوں کا خوب تذکرہ کرتا ہے، سردیوں میں کمبل، توسک، مہنگے مہنگے داموں کے کپڑوں میں زیب تن ہوکر خوب نمائش کرتا ہے ،دوسرے لوگ جو ان تمام سہولیات سے محروم ہیں اور ان چیزوں کا انتظام نہیں کرسکتے ان کا ذرہ برابر خیال نہیں رہتا ،لیکن جب ایک غریب انسان کسی دوسرے کو اپنے سے بھی زیادہ غربت میں مبتلا دیکھتا ہے تو اسے کچھ تسلی ہوتی ہے کہ اللہ کا شکر ہے کہ ہماری زندگی قدر غنیمت ہے جبکہ ضروری ہے کہ ہم سب ایک دوسرے کا خیال کریں اللہ نے دولت سے نوازا ہے تو غریبوں کا بھی خیال رکھیں یہی مذہب اسلام کی تعلیم بھی ہے اس سے منہ موڑ نے والا ہرگز مومن نہیں ہوسکتا –

فی الحال سردی کا موسم ہے اور یہ موسم بھی نیکیاں کمانے کا ذریعہ ہے جہاں ہم اپنے لیے اور اپنے بال بچوں کے لیے گرم کپڑوں کی خریداری کریں تو ساتھ ہی ساتھ اپنے پڑوسی، اپنے سماج اور کمزور طبقے و افراد پر ضرور ایک نظر دوڑائیں اور ان کے لیے بھی سردیوں سے بچنے بچانے کا انتظام کریں اس طرح سردیوں کے موسم کو نیکی کا ذریعہ بنائیں جب ہم خود اس طرح کا راستہ اختیار کریں گے تو پھر حکومت و انتظامیہ سے بھی مطالبہ کر سکتے ہیں کہ شہر کے اندر ایسے انتظامات کیے جائیں جس سے مسافروں کو شدید سردی سے بچنے کے لیے آسانی ہو وہ رات کے کسی حصے میں اچانک کوئی پریشانی لاحق ہونے پر بلا جھجھک اپنی رات گزار سکیں یہی وقت کا تقاضا ہے ۔

مسلم معاشرے میں حقوق اللہ اور حقوق العباد کی تعلیم دی جاتی ہے،لیکن کورونا وائرس اور لاک ڈاؤن کا حوالہ دے کر نہ جانے کتنی فیکٹریوں ،ملٹی نیشنل کمپنیوں،بڑے بڑے میڈیا ٹائیکون اپنے ملازمین کی چھانٹی کرتے ہیں،دکانوں پر کام کرنے والوں پر چھانٹی کی تلوار لٹکی رہتی ہے، اساتذہ و مدرسین کو ایک جھٹکے میں مدارس سے، درسگاہ سے سبکدوش کردیا گیا جو9 ،دس ہزار روپے کی تنخواہ میں درس و تدریس کی خدمات کو انجام دے رہے تھے اور اپنے کنبے کی کفالت کررہے تھے اور اسی مقام پر سرکاری ملازمین کی بھر مار ہے ،سال بھر میں لاک ڈاؤن رہے ان پر فرق نہیں پڑے گا، ان کو 90، اسی ہزار تنخواہ گھر بیٹھے ملتی رہے گی ، ان سے نہ کسی کو چندہ مانگنے کی ہمت ہے اور نہ ہی انہیں کچھ کہنے کی ہمت ہے تو یہاں پر بھی حق کمزوروں کا ہی مارا گیا ۔لاپرواہی، بے حسی، بے بسی کا بول بالا ہے کوئی غریب بھوکا مرجائے، سردی سے مرجائے تو کہ دیا جاتا ہے کہ نشے کا عادی رہا ہوگا، کوئی پریشان حال ہے تو اس پر کام چوری کا الزام عاید کردیا جاتا ہے۔یہ کسی کی غربت اور لاچاری کا مذاق نہیں تو اور کیا ہے، یہی وجہ ہے کہ رات میں کتنے لوگ فٹپاتھ پر اخبار بچھاکر سوجاتے ہیں، اپنے ٹھیلے اور رکشے پر اپنے جسم کے بوسیدہ کپڑوں میں لپٹ کر سوجاتے ہیں لیکن کوئی کچھ دیتا ہے تو وہ لینے سے کتراتے ہیں لیکن ہاں سارے لوگ ایسے نہیں ہیں بلکہ الخدمت جیسے فلاحی ادارے اور مخیر حضرات ہیں جو انسانیت کا درد رکھتے ہیں، انہیں اس بات کا احساس ہے کہ ہم غریبی کا خاتمہ نہیں کرسکتے لیکن خفیہ طریقے سے ان کی امداد کرکے ہم اللہ و رسول کی خوشنودی ضرور حاصل کرسکتے ہیں اور یہی جوش اور جذبہ ہر ایک کے اندر ہونا چاہیے اور بالخصوص مسلمانوں کے اندر سب سے زیادہ ہونا چاہیے اس لیے کہ مذہب اسلام میں زکوٰة کا نظام ہے اور زکوٰة کے نظام کے باوجود بھی کوئی بھوکا مرے تو واضح طور پر کہا جا سکتا ہے کہ زکوٰة کی ادائیگی نہیں کی جارہی ہے بلکہ اس کی اہمیت و فضیلت کو ایک مخصوص مقام تک محدود کردیا گیا ہے جس کی وجہ سے اس کے اصل حقدار اس مخصوص و عظیم الشان سہولت سے محروم رہ جاتے ہیں ۔

شہر شہر کی خبریں

الخدمت کے43واٹر فلٹریشن پلانٹس سے یومیہ 46ہزارافراد کو پانی کی فراہمی

  کراچی ( نمائندہ رنگ نو )الخدمت کراچی کی جانب سے شہریوں کو صاف اور پینے کے معیاری پانی کے

... مزید پڑھیے

کراچی پریس کلب کی 63سالہ جمہوری روایات قابل تقلید ہیں :محمود حامد

کراچی (نمائندہ رنگ نو ) آل پاکستان آرگنائزیشن آف اسمال ٹریڈرز اینڈ کاٹیج انڈسٹریز کراچی کے صدر محمود

... مزید پڑھیے

الخدمت کے تحت یتیم بچوں کی ہیلتھ اسکریننگ کا پانچواں مرحلہ مکمل

  کراچی ( نمائندہ رنگ نو ڈاٹ کام)الخدمت کراچی کے” آرفن کیئر پروگرام “کے تحت رجسٹرڈ

... مزید پڑھیے

تعلیم

ملک بھر میں تعلیمی ادارے تقریبا 2ماہ بعد دوبارہ کھل گئے (تعلیم)

اسلام آباد ( ویب ڈیسک )ملک بھر میں کورونا وائرس کی دوسری لہر کی وجہ سے دوسری مرتبہ بند ہونے

... مزید پڑھیے

وفاقی نظامت تعلیمات : اسکولوں کے اوقات کار کا نوٹیفکیشن جاری (تعلیم)

اسلام آباد(تعلیم ڈیسک) وفاقی نظامت تعلیمات نے اسکولوں کے اوقات کار کا نوٹیفکیشن جاری کر دیا ہے۔ ہفتہ کے

... مزید پڑھیے

سندھ کے میڈیکل کالجز ویونیورسٹیز میں داخلے سے محروم طلبا کیساتھ زیادتیوں کیخلاف مظاہر ہ (تعلیم)

کراچی(تعلیم ڈیسک) امیر جماعت اسلامی کراچی حافظ نعیم الرحمن نے سندھ کے میڈیکل

... مزید پڑھیے

کھیل

پی ایس ایل 6کی میزبانی لاہور اور کراچی کو دینے کا حتمی فیصلہ

لاہور( اسپورٹس ڈیسک )لاہور کا قذافی سٹیڈیم اور کراچی کا نیشنل سٹیڈیم 20 فروری سے پاکستان سپر لیگ (پی

... مزید پڑھیے

قائد اعظم ٹرافی فرسٹ الیون کاآخری راﺅنڈ مکمل

لاہور(اسپورٹس ڈیسک) اسٹیٹ بینک اسٹیڈیم میں قائد اعظم ٹرافی فرسٹ الیون کے دسویں

... مزید پڑھیے

پہلا ٹیسٹ، پاکستانی ٹیم دوسری اننگز میں بھی مشکلات کاشکار

ماﺅنٹ منگوئی(اسپورٹس ڈیسک )پاکستان اور نیوزی لینڈ کے درمیان کھیلے جانے والے پہلے

... مزید پڑھیے

تجارت

ملک میں ایک ہفتے کے دوران 23 اشیائے ضروریہ کی قیمتوں اضافہ

اسلام آباد(ویب ڈیسک )ملک میں ایک ہفتے کے دوران 23 اشیائے ضروریہ کی قیمتوں اضافہ ہوا

... مزید پڑھیے

گھی کے بعد کوکنگ آئل کی قیمت میں 29 روپے فی لیٹر اضافہ ہوگیا

لاہور (ویب ڈیسک ) گھی اور کوکنگ آئل تیار کرنے والی کمپنیوں نے اپنی مصنوعات کی قیمتوں میں مزید اضافہ کردیا

... مزید پڑھیے

فی تولہ سونا ایک لاکھ 10 ہزار 350 روپے کا ہوگیا

کراچی( رنگ نو ڈاٹ کام )پاکستان  بھر میں کاروباری ہفتے کے اختتام پر

... مزید پڑھیے

دنیا بھرسے

دنیا بھر میں کورونا وائرس سے ہلاکتیں 1835389ہو گئیں

نیویارک ، نئی دہلی ، ماسکو ،انقرہ(ویب ڈیسک)مہلک وبا کورونا وائرس کے باعث دنیا بھر میں

... مزید پڑھیے

کورونا کی وبا سنگین ،مستقبل کے امراض بدترین ہوسکتے ہیں، ڈبلیو ایچ او

جنیوا(ویب ڈیسک ،خبر ایجنسی)نوول کورونا وائرس نے دنیا بھر میں تباہی مچائی ہے مگر

... مزید پڑھیے

بالغ عورت پسند کی شادی اورمذہب تبدیل کرنے میں بااختیار ہے ، بھارتی عدالت

کلکتہ(ویب ڈیسک ،خبر ایجنسی) کلکتہ ہائی کورٹ نے کہا ہے کہ بالغ عورت اپنی پسند کی

... مزید پڑھیے

فن و فنکار

کام کے دباﺅ نے فیملی کے کئی خوبصورت احساس چھین لئے : مہوش حیات

لاہور (شوبز ڈیسک) اداکارہ مہوش حیات نے کام کے دباو نے ان سے فیملی کے کئی خوبصورت احساس چھین لئے

... مزید پڑھیے

حرامانی فیشن ڈیزائنر عاصم جوفا کی نئی کلیکشن کی تشہیری مہم کا حصہ

لاہور (شوبز ڈیسک) اداکارہ حرامانی فیشن ڈیزائنر عاصم جوفا کی نئی کلیکشن انارا کی تشہیری مہم کا حصہ بن

... مزید پڑھیے

زندگی بہت حسین ہے اس کی قدر کریں،اداکارہ صبا قمر

اسلام آباد (ویب ڈیسک )اداکارہ صبا قمر نے کہا ہے کہ زندگی بہت حسین ہے اس کی قدر کریں۔

... مزید پڑھیے

دسترخوان

اسپائسی فش اسٹکس

قرة العین
اجزا
مچھلی کے فلے۔۔ 500 گرام

... مزید پڑھیے

کوفتہ ہرا مصالہ پلاﺅ

انتخاب:امِ سعد

:اجزاءکوفتہ کیلئے

... مزید پڑھیے

بلاگ

مفتی قوی پھر ٹریپ ہوگئے (زین صدیقی)

زین صدیقی

میں جانتا ہوں مفتی عبدالقوی صاحب کا گھرانہ دین دار ہے۔ان کے چچا مفتی پیر عبد الراق قدوسی سے ایک عرصے تک میرے

... مزید پڑھیے

”تیر ی خودی میں اگر انقلاب ہو پیدا“ (بلاک)

ڈاکٹر طارق شہزاد تبسم،شجاع آباد

آپ سب کو معلوم ہے کہ دنیا کے نقشے پر پاکستان ہی وہ واحد مملکت ہے جو اسلام کے نام پر ، اسلام کی خاطر

... مزید پڑھیے

الخدمت کی سنہری خدمات (زین صدیقی)

زین صدیقی

ملک کو 2005 میں زلزلہ جیسی قدرتی آفت کا سامنا تھا توالخدمت نے بڑھ چڑھ کر کام کیا ۔متاثرہ علاقوں

... مزید پڑھیے