پاکستان پانی کی اہمیت پر 161ممالک کے مشترکہ اعلامیہ کا حصہ بن گیا

اقوام متحدہ(ویب ڈیسک )پاکستان کورونا وائرس کی وبا کے دوران خاص طور پر

متعدد ترقی پزیر ممالک میں ویکسین کی فراہمی نہ ہونے کے باعث بچاﺅ کے اقدامات کے تحت صفائی اور حفظان صحت کے اصولوں پر عملدرآمد کے لیے پانی کی اہمیت کے حوالہ سے 161 ممالک کے مشترکہ اعلامیہ کی حمایت کرتے ہوئے اس کا حصہ بن گیا۔ اس حوالے سے گزشتہ روز پانی اور اس سے وابستہ اہداف کے 2030 ایجنڈا پر عملدرآمد سے متعلق اعلی سطح کے اجلاس میں مشترکہ علاقائی اعلامیہ جاری کیا گیا۔
اعلامیہ میں پانی کو انسانوں ، جنگلی حیات، جانوروں اور پودوں کی زندگی کی بقا کا ذریعہ قرار دیا گیا اور کہا گیا کہ پانی اور حفظان صحت سے متعلق ہر وقت انسانی حقوق کے فروغ ، تحفظ اور اس پر عملدرآمد ہونا چاہیے۔ اقوام متحدہ میں پاکستان کے مستقل مندوب منیر اکرم نے اپنے ٹویٹ میں کہا کہ پاکستان کو پانی کی اہمیت پر 161 ممالک کے مشترکہ اعلامیہ کا حصہ بننے پر فخر ہے۔
انہوں نے کہا کہ مشترکہ اعلامیہ اس بات کی تصدیق کرتا ہے کہ اجتماعی عزم اور تعاون سے ہم سب پینے کے صاف پانی اور پانی کی فراہمی کے لئے ہمہ گیر اور مساوی رسائی حاصل کرسکتے ہیں لہٰذا 2030 کے پانی کے تحفظ کے حصول کو یقینی بنانے کے لیے بین الاقوامی قانون کے تحت پانی سے وابستہ بنیادی ڈھانچوں میں سرمایہ کاری بڑھانے کی ضرورت ہے۔