شعروادب

یہ اک تنہا لڑکی مسکان نہیں پورا کا پورا ایمان ہے

اسلام اور حجاب کے لیے دشمن کے سامنے سراپا احتجاج ہے

آج اس نے " اللہ اکبر " کہ کر جنھنجھڑا ہر مسلمان ہے

خطرے میں ہے بنت حوا کی عصمت اور حجاب ہے

اب اگر نہ ا ٹھے گا ابن آدم تو پھر باطل ہمیشہ کے لیے آزاد ہے 
پھر اک اورمرو شرینی نے اٹھائی حیا کے لیے اکیلی آواز ہے 

وہ روئی نہیں ہنود کے سامنے اس کے دین کا عرفان ہے

سوشل میڈیا اورعورت نے کیا اس کی عظمت کو سلام ہے 

بحثیت مسلمان ہم نے اس کے لیے کیا کیا کام ہے
کسی مسلم نے اقوم متحدہ سیے ھندو کے خلاف درج کروائی درخواست ہے 

ایمان کی تین حالتوں میں پوری کئی کوئی بات ہے ۔

اے مسلم کیا تدبر بھی کیا تونے آج تو کیوں لا چار ہے

کیون تیرے ہاتھہ میں نہیں انصاف کی تلوار ہے

تو بے خبر سو رہا تیری بیٹی میدان کارساز ہے 

بیدار ھو جا کہ اب مسلمان کو آرام کرنا حرام ہے 

دین اسلام کو پھر درکار علی ِرضہ اورعمر جیسا سپہ سالار ہے

کیونک ھنود کی سر زمین پر ھو رہا جا بجا نا انصاف ہے

یہ اک تنہا لڑکی مسکان نہیں ہورا کا ہورا ایمان ہے ۔

صبا احمد