بارہ اکتوبر سے بارہ اکتوبر تک

کل بارہ اکتوبر تھی۔ سوچتا ہوں ان بائیس برسوں میں کیا بدلا ‘جب بارہ اکتوبر 1999 ء کو نواز شریف کی حکومت برطرف کی گئی تھی؟


آج حالات دوبارہ وہیں جا کھڑے ہوئے ہیں۔ آج پھر اسلام آباد افواہوں کی زد میں ہے۔ پھر وہی سرگوشیاں سنائی دے رہی ہیں۔ پھر وہی خفیہ ملاقاتیں ہورہی ہیں۔ پھر قاصد مراسلے لے کر ایک دربار سے دوسرے دربار جارہے ہیں۔ سب کے ہونٹ سلے ہوئے ہیں۔ کوئی وزیرمشیر بات کرنے کو تیار نہیں۔ اور تو اور شیخ رشید صاحب تک اس سوال کا جواب دینے کو تیار نہیں ‘بلکہ گیند فواد چوہدری کی طرف لڑھکا دی کہ ان سے پوچھیں وہ خود بات نہیں کرسکتے۔ یہ وہی صاحب ہیں جو اپنی وزارت کے علاوہ دنیا کا ہر کام جانتے ہیں اور اس بارے میں رائے رکھتے ہیں۔ انہیں پوری دنیا کا پتا ہے لیکن اگر پتا نہیں ہے تو اپنی وزارت کا کہ باقی ملک چھوڑیں صرف اسلام آباد میں جرائم کی شرح بہت بلند ہوچکی اور اب اس شہر میں جرائم اور جرائم پیشہ ہی حکمرانی کررہے ہیں۔
سوال یہ ہے ان برسوں میں بارہ اکتوبر سے بارہ اکتوبر تک کیا بدلہ ؟ کس نے کوئی سبق سیکھا یا ایک ہی سبق سیکھا کہ طاقتور سے بنا کر رکھو‘ جس کے پاس توپیں یا بندوقیں ہیں۔ چلیں عمران خان صاحب کو تو پتا نہیں تھا کہ اقتدار کا کھیل کیسے کھیلا جاتا ہے اور اس کی کیا ضروریات ہوتی ہیں لیکن نواز شریف کو تو پورا علم تھا کیونکہ وہ پہلے دو دفعہ وزیراعظم بن چکے تھے تو تیسری دفعہ بھی وہ کچھ نہ سیکھ سکے اور وہیں سے سلسلہ شروع کیا جہاں وہ بارہ اکتوبر 1999 ء کو چھوڑ گئے تھے۔ میری نواز شریف کے بارے ایک رائے ہے کہ انہیں چوتھی دفعہ بھی وزیراعظم بنا دیں تو وہ چوتھی دفعہ بھی اپنی حکومت تڑوا کر جیل سے ہوتے ہوئے جدہ یا لندن جا بیٹھیں گے۔ جب وہ تیسری دفعہ وزیراعظم بنے تو کچھ امید تھی کہ اب کی دفعہ وہ کچھ اداروں کو ضرور مضبوط کریں گے جو کل کلاں ان کو بچا سکیں‘ لیکن ان برسوں میں انہوں نے انہی اداروں کو کمزور کیا جو ان کو بچا سکتے تھے۔ پارلیمنٹ جو اُن کا سیاسی گھرانہ تھا وہاں وہ آٹھ ماہ تک نہ گئے۔ سینیٹ آف پاکستان میں ایک سال تک نہ گئے اور سینیٹر رضا ربانی صاحب کو رولز میں ترمیم کرانا پڑی کہ وزیراعظم اور کچھ نہیں تو کچھ عرصے بعد ہاؤس کا چکر ہی لگالیا کریں۔ وہ پھر بھی ایک دفعہ نہیں گئے۔ باقی چھوڑیں کابینہ کا اجلاس چھ چھ ماہ بعد ہوتا رہا۔ وہ کابینہ جس نے ملک کے اہم فیصلے کرنے تھے۔ یوں سب کچھ ٹھیکے پر دے کر وہ خود ابن بطوطہ کی طرح دنیا کے سفر پر نکلے اور سو سے زائد ملکوں کا دورہ کیا اور پورے چار سو دن ملک سے باہر رہے۔ بیرونِ ملک سے جو تحائف وصول کیے ان کی نہ کوئی خبر ہے نہ وہ بتانا چاہتے ہیں۔ سینیٹ میں کلثوم پروین نے پوچھ لیا کہ نواز شریف کو بیرونی دوروں میں کیا کچھ ملا‘ جواب میں جنرل مشرف کا 2002ء کے آرڈیننس کی کاپی بھیج دی کہ یہ سب تحائف قومی راز ہیں‘ نہیں بتائے جا سکتے۔ وہی مشرف جو برا لگتا تھا اس کا آرڈیننس اچھا لگ گیا کیونکہ تگڑا مال چھپانے کا موقع مل رہا تھا۔ یہی کام اب خان صاحب نے تحائف پر کیا ہے۔
نواز شریف دور میں کچن کیبنٹ حکومت چلا رہی تھی۔ اسحاق ڈار‘ مریم نواز اور دو تین فیورٹ بابوز جو اُن کے کہنے پر کچھ بھی کرنے کو تیار تھے۔ایسے ہی بابوز کی ضرورت ہر حکمران کو رہتی ہے۔
یاد آیا کہ چین کے دورے میں فرمایا تھا کہ سب سے سینئر افسر کو سپہ سالار بنائوں گا۔ اب کی دفعہ ماضی کی غلطی نہیں دہرائی جائے گی لیکن جونیئر کو ہی سپہ سالار لگایا۔
اب عمران خان صاحب کی باری ہے۔آپ اُن کو وزیراعظم بننے سے پہلے ذاتی طور پر جانتے ہوں تو میں شرطیہ کہہ سکتا ہوں کہ آپ اب انہیں نہیں پہچان سکتے۔ کم از کم میرے لیے انہیں پہنچاننا مشکل ہے۔ اقتدار نے انہیں بھی بدل دیا ہے اور کسی کو حیرانی نہیں ہونی چاہیے۔ انہیں بھی ہم عام لوگوں کی طرح ذاتی فائدہ نقصان کی پروا ہے‘ اگر نہ ہوتی تو وہ کبھی عثمان بزدار جیسے بندے کو وزیراعلیٰ پنجاب نہ لگاتے۔ عمران خان نے صرف اپنا فائدہ دیکھا یا ان کا جنہوں نے عثمان بزدار کا استخارہ نکالا تھا ورنہ آپ کوان صاحب سے ملنے کے دو تین منٹ بعد اندازہ ہوجاتا ہے کہ کس طرح کی چوائس تھی اور اس کا نتیجہ کیا نکلنا ہے۔ ایک اہم وزیر نے کہا کہ خان صاحب وزیراعظم بن کر ہر ذہین اور قابل بندے سے خوف زدہ ہیں لہٰذا انہوں نے جان بوجھ کر پنجاب اور خیبرپختونخوا میں کوئی ایسا بندہ نہیں لگایا جسے وہ چند منٹ میں برطرف نہ کرسکتے ہوں۔ انگریزی فلم Heat یاد آئی جس کا ایک ڈائیلاگ تھا کہ میں نے زندگی میں ایسا کوئی تعلق نہیں بنایا یا رکھا جسے میں چند سکینڈز میں بریک نہ کرسکوں۔یہ ڈائیلاگ خان صاحب پر فٹ بیٹھتا ہے۔
خان صاحب بھی نواز شریف کے نقش قدم پر چلے۔ انہیں بھی یہی احساس ہوگیا کہ عوام کی طاقت سے زیادہ بندوق کی طاقت سے وزیراعظم بنا اور حکومت کی جاتی ہے لہٰذا وہ بھی قومی اسمبلی اور سینیٹ سے دور رہے۔ سینیٹ میں تو مجھے یاد نہیں پڑتا کہ وہ آخری دفعہ کب گئے تھے۔ ہاں ایک کام انہوں نے ضرور اچھا کیا جو نواز شریف نے نہیں کیا تھا۔ خان صاحب نے ہر ہفتے کابینہ اجلاس بلا کر ریکارڈ قائم کیا ہے جس کو سراہنا چاہئے کہ کم از کم اس جمہوری فورم کو انہوں نے تقویت بخشی جو پہلی حکومتوں میں نہیں تھی۔ نواز شریف دور میں تو بالکل بھی نہیں تھی۔
اگرچہ انہی کابینہ اجلاسوں میں ان کی اپنی حکومتوں کے سکینڈلز بریک ہوتے رہے‘ انکوائریز ہوتی رہیں لیکن مجال ہے کسی ایک پر کوئی ایکشن ہوا ہو۔ سب اپنے یار دوست تھے جس کے ہاتھ جو لگا ‘وہ لے گیا۔ اس کا نتیجہ یہ نکلا ہے کہ نواز شریف دوبارہ پوری قوت سے سیاسی منظر نامے پر نمودار ہوچکے ہیں۔ میں بار بار ایک بات دہراتا ہوں کہ شریف خاندان بائیس برس دوبارہ کھڑا نہیں ہوسکتا تھا لیکن خان صاحب کی گورننس اور ان کے لاڈلے بزدار نے انہیں بائیس ماہ میں دوبارہ اپنے پائوں پر نہ صرف کھڑا کیا بلکہ وہ اب عمران خان کی حکومت کے پائوں کاٹنے پر آگئے ہیں۔ یہ اور بات ہے کہ آج کل اسلام آباد میں ڈی جی آئی ایس آئی کے ایشو پر کشمکش کے مناظر اندرونِ خانہ چل رہے ہیں‘ خان صاحب کو کسی دشمن کی ضرورت نہیں‘ نہ ہی انہیںکسی کلہاڑے کی ضرورت ہے کہ وہ اپنی ہی حکومت کے پائوں کاٹ ڈالیں۔ جس شاخ پر آپ بیٹھے ہوں اور اسے ہی کاٹ رہے ہوں۔ ایسے منظر دیکھنا ہو تو آج کل اسلام آباد کی طرف دیکھیں۔
کیا کریں ہر تین سال بعد اسلام آباد پنڈی کا پھڈا ہونا ہی ہوتا ہے چاہے سربراہ آپ اپنی مرضی کا رکھ لیں۔ اب کم از کم نواز شریف کہہ سکتے ہیں کہ جناب یہ الزام صرف مجھ پر ہی کیوں کہ میری اپنے ہی لگائے ہوئے آرمی چیف سے نہیں بنتی۔
بارہ اکتوبر سے بارہ اکتوبر تک وہی پرانا پھڈا ہے۔ بارہ اکتوبر 1999ء والے دن بھی یہی پھڈا تھا‘ آج بارہ اکتوبر 2021ء کو بھی وہی پھڈا ہے۔ وہی فیض صاحب والی بات کہ پاکستان کو کچھ نہیں ہوگا، یہ ایسے ہی چلتا رہے گا(بشکریہ روزنامہ دنیا) 

شہر شہر کی خبریں

رواں سال کا دوسرا اور آخری چاند گرہن 19نومبربروز منگل کو ہو گا


لاہور(ویب ڈیسک)رواں سال کا دوسرا اور آخری چاند گرہن 19نومبر کوبروزمنگل ہو گا۔

... مزید پڑھیے

الخدمت کراچی کےتعاون سے مختلف علاقوں میں 3مفت میڈیکل کیمپس کا اہتمام

 کراچی(نمائندہ رنگ نو)الخدمت کراچی کےتحت شہر کےمختلف علاقوں میں 3مفت جنرل وآئی کیمپس کا اہتمام کیا گیا

...

... مزید پڑھیے

سرائیکی شاعرشاکرشجاع آبادی کی وائرل ویڈیو پروزیراعلی پنجاب نے نوٹس لے لیا

ملتان (رپورٹ :طلحہ صدیقی /بلال صدیقی )سرائیکی کے لیجنڈ شاعرشاکر شجاع آبادکی پھر طبعیت خراب ہوگئی ، کسمپرسی کےعالم میں موٹر سائیکل پر

... مزید پڑھیے

تعلیم

ملتان: انٹرمیڈیٹ کے نتائج کا اعلان،48 طلبا کے 1100 میں سے 1100 نمبر (تعلیم)

ملتان(نمائندہ رنگ نو ) ملتان تعلیمی بورڈ نے انٹرمیڈیٹ کے نتائج کا اعلان کردیا ہے ۔

... مزید پڑھیے

ملک بھر میں تمام تعلیمی ادارے سو فیصد حاضری کے ساتھ کھل گئے (تعلیم)

اسلام آباد( ویب ڈیسک) ملک بھر میں 100 فیصد حاضری کے ساتھ تعلیمی ادارے کھول دیئے گئے، کورونا وائرس میں کمی کے بعد

... مزید پڑھیے

الخدمت کےتحت ” فارمیسی انٹرن شپ پروگرام “ 2021کیلئےانٹری ٹیسٹ کا اہتمام (تعلیم)

کراچی (نمائندہ رنگ نو )الخدمت کراچی کی جانب سے” فارمیسی انٹرن شپ پروگرام “ 2021کیلئے مرکزی آفس میں انٹری ٹیسٹ

... مزید پڑھیے

کھیل

ٹی ٹوئنٹی ورلڈ کپ :پاکستان نے نیوزی لینڈ کو 5 وکٹوں سے شکست دیدی

شارجہ ( اسپورٹس ڈیسک ) پاکستان نےبھارتی سورماؤں کے بعد کیوی ٹیم کی بھی دھلائی کردی۔ٹی ٹوئنٹی ورلڈ کپ کے دوسرے میچ میں 5وکٹوں سے 

... مزید پڑھیے

ٹی توئنٹی ورلڈ کپ : بھارت کو پاکستان کے ہاتھوں دس وکٹوں سے شکست

دبئی (اسپورٹس ڈیسک )پاکستان نےبھارت کو تاریخی دھول چٹادی۔ٹی ٹوئنٹی ورلڈ کپ کے پہلے میچ میں پاکستان نےبھارت کو دس وکٹوں سے ہرا کر میچ

... مزید پڑھیے

ویسٹ انڈیز ویمن کرکٹ ٹیم کراچی میں3 ون ڈے کھیلے گی

کراچی(اسپورٹس ڈیسک) ویسٹ انڈیز کی خواتین کرکٹ ٹیم نومبر میں تین ایک روزہ بین الاقوامی میچوں کے لیے پاکستان آئے گی۔ کراچی کا مشہور

... مزید پڑھیے

تجارت

پیٹرولیم ڈیلرزایسوسی ایشن کی 5 نومبرکو ملک گیر ہڑتال کی کال

‏لاہور: پیٹرولیم ڈیلرزایسوسی ایشن نے 5 نومبر کو ملک بھر میں ہڑتال کی کال دے دی۔ میڈیا ذرائع کے مطابق  پیٹرولیم ڈیلرز ایسوسی ایشن کا کہنا ہے کہ

... مزید پڑھیے

ملک میں پٹرول کی قیمت میں مزید 8 روپے اضافے کا امکان

اسلام آباد:پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے کا امکان ہے ۔پٹرول کی قیمت میں 8 روپے فی لیٹر اضافے کا امکان ہے ۔اوگرا ذرائع کے مطابق پٹرول کی

... مزید پڑھیے

گزشتہ 3برس کے دوران پاکستان میں مہنگائی نے 70سالہ ریکارڈ توڑ دیئے

اسلام آباد (ویب ڈیسک )پاکستان میں گزشتہ تین سال میں مہنگائی نے 70سال کے ریکارڈ توڑ دیے، کھانے پینے کی اشیا کی قیمتوں میں دو گنا اضافہ ہوگیا،

... مزید پڑھیے

دنیا بھرسے

قانون کی حکمرانی کے لحاظ سے پاکستان بدترین ممالک میں شامل

اسلام آباد(ویب ڈیسک،خبر ایجنسی)پاکستان قانون کی حکمرانی کے لحاظ سے سب سے کم درجہ والے اور بدترین ممالک میں شامل ہوگیا۔ورلڈ جسٹس

... مزید پڑھیے

عمر شریف کا سرکاری ڈیتھ سرٹیفکیٹ جاری،مسجد نیورمبرگ میں نمازجنازہ ادا

نیورمبرگ(ویب ڈیسک)نیورمبرگ بلدیہ نے عمر شریف کا سرکاری ڈیتھ سرٹیفکیٹ جاری کردی ہے۔عمر شریف کی میت بیوہ اور سفارتی عملے کے

... مزید پڑھیے

توہین آمیز خاکے بنانے والا کارٹونسٹ کارحادثے میں جھلس کرہلاک

اسٹاک ہوم (ویب ڈیسک )توہین آمیز خاکے بنانے والا سوئیڈن کا کارٹونسٹ کارحادثے میں جھلس کر ہلاک ہو گیا ۔

... مزید پڑھیے

فن و فنکار

خوشیاں پھیلائیں جنگ نہیں، عتیقہ اوڈھو کا مودی کو مشورہ

اسلام آباد(شوبز ڈیسک) معروف اداکارہ عتیقہ اوڈھو نے پاک بھارت میچ میں پڑوسی ملک کی تاریخی شکست کے بعد بھارتی وزیر اعظم نریندر مودی کیلئے

... مزید پڑھیے

وینا ملک نے سابق شوہر پر پیسوں کیلئے بلیک میل کرنے کا الزام لگا دیا

راولپنڈی (شوبز ڈیسک) اداکارہ وینا ملک کا کہنا ہے کہ ان کا سابق شوہر اسد خٹک پیسوں کے لیے انہیں بلیک میلنگ کررہا ہے، پیر کے روز راولپنڈی کے

... مزید پڑھیے

معروف ٹک ٹاکرجنت مرزا ٹک ٹاک کے بعد انسٹاگرام پر بھی چھاگئیں

لاہور(شوبز ڈیسک) پاکستان کی صف اول کی ٹک ٹاک اسٹار اور اداکارہ جنت مرزا ٹک ٹاک کے بعد انسٹاگرام پر بھی چھاگئیں۔ جنت مرزا کو فوٹو اینڈ

... مزید پڑھیے

دسترخوان

ڈبہ پیک کھانے

 

عظمیٰ ابونصرصدیقی

حالیہ تحقیق نے ثابت کیا ہے کہ پہلےسے تیارشدہ کھانےنہ صرف موٹاپے کا باعث بنتے ہیں بلکہ یہ صحت کےلیے بھی نقصان

... مزید پڑھیے

اسپائسی فش اسٹکس

قرة العین
اجزا
مچھلی کے فلے۔۔ 500 گرام

... مزید پڑھیے

بلاگ

میرے نبی صلی الله عليه وسلم سے میرا رشتہ کیا ہے ؟ (بلاک)

عائشہ مشیر

.کئی روزتک اس موضوع پر لکھنےکی کاوش میں لگی رہی لیکن ہر مرتنہ ناکامی کا سامنا ہوا۔ ذہن سوچوں کا مرکز بن گیا

... مزید پڑھیے

ربیع الاول اور فرقہ واریت (صباحت شمیم)

صباحت شمیم

چندروزقبل فیس بک پر ایک پوسٹ گردش کر رہی تھی جس پر لکھا تھاکہ ولادت کا دن 9 ربیع الاول ہے،جبکہ وفات کی تاریخ 12 ربیع الاول ہے

... مزید پڑھیے

لیاقت علی خان کی وطن عزیز کیلئے قربانی (بلاک)

رنگ نو

 لیاقت علی خان جوقیام پاکستان سے قبل بھارتی پنجاب میں کرنال کی 360 گاؤں کی جاگیروجائیداد کے مالک تھے۔انہوں  نوابی دور میں  بھی کبھی

... مزید پڑھیے