”عیش شجاع آباد ی “

                ڈاکٹر طارق شہزاد تبسم (شجاع آباد)                     

ادب کے دورِ جدید کا عظیم شہرہ آفاق جس کی نوامی شوق ہمیشہ اپنے پڑھنے والوں کے دلوں کو گرماتی رہے

گی۔ فطرت نے توصیف و تخلیق حسن کیلئے منتخب کیا اور اس کے بیدار ذہن اور حساس دل کو دردواندوہ کے سرمایہ سے نوازا۔ اجتماعی و ملی درد کے علاوہ قدرت نے اسے ذاتی درد کا سرمایہ عطا کرنے میں بھی کسی طرح بخل سے کام نہیں لیا ۔ شاعری کا باقاعدہ آغاز کیا ۔ طالب علم کی حیثیت سے تمام مضامین مطالعہ میں نمایاں حیثیت حاصل کرتا رہا ، مگر فارسی ، اردو زبان و ادب میں معلومات زیادہ رکھتے تھے ۔ا ن کی شاعری میں منظرہ نگاری ، پیکرہ تراشی اور وصف حسن ہے۔ اپنے اوّلین دورہ شاعری میں شاعر طبعاً مروجہ اسلوب شعر یعنی سبق”دیوانی “ کا مقلد نظر آتا ہے اور عصر ِ جدید کے لکھنے والوں کے اسالیب کا اثر بھی اِ س کے طالب علموں کے کلام میں نظر آتا ہے ۔

شاعر تقریباً 20برس کی عمر میں خوش بینی اور خوش ذوقی سے سرشار رہا ۔

شعر کہنا روح کا وجدان ہے اور۔۔۔۔ موسیقی فرشتوں کی زبان ہے کثیف مادہ ۔۔۔ اور اس کی ترتیب ۔۔۔ دنوں ۔۔۔ بے شک مٹ جائیں گے اور بے رحم ہوائیں میرانام ونشان اُڑالے جائیں گی لیکن میری روح وہ ہمیشہ ۔۔۔ بے نام کیفیتوں ، زاویوں میں ، تیر محبت (شعر) کے گیت گاتی رہے گی۔

غزل ، نظم جس نے سعدی اور حافظ کے دیس میں جنم گرجے ۔۔۔ آبیاری کیلئے دل دُکھی اور میر تقی میر کا خون جگر پسند آیا آج بھی ۔۔۔۔اُردو شاعری کا سب سے بڑ اسرمایہ افتخار ہے ۔ آج بھی ۔۔۔جب کوئی بے نام کیفیت کسی سانچے میں ڈھلنے سے انکار کردے تو عشق کا سُوز اور محبت کی جدت ا ور پوری دلکشی اور محبت کی حدت اور پوری دلکشی اور جاذبیت کے ساتھ یہ حُسنِ تغزل کے پیکر میں سمو دیتے ہیں ۔

زندہ شاعری کرنے والے شاعر مرا نہیں کرتے ۔ عیش شجاع آبادی آج بھی اپنی شاعری کے تناظر سانس لے رہا ہے ۔ زندہ احساس کے لوگ اُسے ہمیشہ ہمیشہ زندہ محسوس کرتے ہیں ۔ عیش شجا ع آبادی کی زندگی ایک ایسا مُحدب شیشہ ہے جس کے کئی پہلو ہیں اور جس پر نظر کیجئے وہ ایک عجیب و غریب لیکن انتہائی پیار ی رنگا رنگ شخصیت کا مالک تھا ۔ وہ ایک خوبصورت شخص رعنائیاں اس کی بلائیں لیتی تھیں ۔ غرور حسن نے اس میں عاشق کے محبوب بننے کا جذبہ پیدا کردیا تھا ۔ چاہے جذبے کاجذبہ تو ہر ذی روح میں موجود ہوتا ہے لیکن اس شخص میں یہ جذبہ زیست کی حدوں کو چھوتا تھا ۔ عیش شجاع آبادی کی زندگی کی طرح ادب پر بھی ان کی انفرادیت کی گہری چھاپ ہے ۔ انہوں نے نظم ونثر دونوں میںہمیشہ نئی راہیں تراشنے اور نئے اُفق دریافت کرنے کی کوشش کی ہے۔ کم سنی میں شاعری کا آغاز کیا جس زمانے میں وہ مدرسے پڑھ رہے تھے ان کے گھر پر شعر وسخن کی محفلیں بر پا ہوتی رہتی تھیں ۔ ان کے والد میاں محمد احمد بخش اردو اور فارسی کے بڑے اچھے شاعر تھے ۔ والد کی محبت اور اُن کی بہترین علمی و ادبی موروثی تھی ۔

شاعری کا آغاز اکثر دوسرے شعراءکی طرح غزل سے ہوا اور دوسری جماعت میں بھی غزل لکھ کر جب اپنے والد کو دکھائی تو انہوںنے ان کی حوصلہ افزائی کرکے ان کے شوق کو مسمیز کیا ۔

جنوبی پنجاب کی ادبی تاریخ میں یہاں کے ادبی اداروں کو بڑی اہمیت حاصل ہے بلکہ درحقیقت یہاں کے پورے ادب کی تاریخ انہی اداروں کے گرد گھومتی ہے ان اداروں نے اپنے اپنے دور میں ادب کو پروان چڑھاتے اور ترقی دینے میں قابل قدر خدمات انجام دی ہیں ۔ ادبی محفلوںاور تنقید کی محفلوں کے ذریعے اردو زبان کی ترویج کی نئے نئے قلمکار پیدا کیے۔

عیش شجاع آبادی نے اپنی شاعری کا آغاز عنوان شباب میں ہی کردیا تھا ۔ یہی وجہ ہے ان کی پرانی غزلوں میں کہیں کہیں بلبلِ جام و سپو اور حُسن ِ شباب کی چاسنی سے لبریز روایتی شاعری بھی ملتی ہے، لیکن بنیادی طور پر چونکہ وہ راسخ العقیدہ اور باعمل مسلمان تھے اس لیے ان کے زیادہ تر کلام میں صوفیانہ رنگ اور تصوف کی مٹھاس کا احساس ملتا ہے ۔ مثلا ً!

”چھیڑ دیتا ہوں ساز ذکرِ حبیب

جب طبیعت حلول ہوتی ہے “

عیش شجاع آبادی کی شاعری میں کچھ رنگ تیکھے ، کچھ شوخ اور کچھ مدہم ہیں لیکن اس کے باوجود ان کی غزل میں حسن وجمال ، جذبات ، احساسا ت ، تفکر اور کسی حد تک تصوف کے عناصر ایک ہی لڑی میں پڑے ملتے ہیں ۔ ان کے اشعار میں لفظوں کی روانی ، لہروں کا ترنم، موسیقیت اور خیالات کی جولانی نے ایک ناقابل بیاں کیفیت پید ا کردی ہے ۔

یہ کمال اردو کے بہت کم شعراءکو حاصل رہا ہے ان کی شخصیت اور فن کا بھی جلترنگ پڑھنے والوں کو ایک ایسی وادی میں لے جاتا ہے جہاں جمالیاتی اور محسوساتی اظہار کی ہلکی ہلکی بارش سا اپنا وجود گھلتا محسوس ہوتا ہے ۔

عیش شجاع آبادی کی شاعری واردات کلیاتی شاعری ہے ۔ ان کی شاعری میں ہجرو وصال ، حسن وعشق کے تذکرے عام ہیں ۔ ان کی اشعری میں بظاہر حسن وعشق مٹے اور منیا کی شاعری نظر آتی ہے ، لیکن عیش کے ہاں تفکر کا عنصر عروج پر ہے ۔

المختصر ! ان کی شاعری میں درد ہے ، مگر مایوسی کہیں نہیں وہ بد ترین حالات کے خلاف اپنی شدید نفرت کا اظہار کرتا ہے لیکن کبھی نااُمید نہ ہونا اس کامیابی ہے کہ بشریت ایک نہ ایک دن ضرور سیاسی ، نسلی ، مَذہبی ، لسانی اور جغرافیائی حد بندیوں کے تعصبات کی لعنت سے حاصل کرے گی اور انسانیت کا قانون مسلم مروج ہوگا۔ شاعری کا یہ رجائی پہلو دفتر خلوق میں زیادہ نمایاں ہے ” تاریخ دیکھ کر معلوم ہوتا ہے “ کہ زندگی حق ہے دوسروں کی زندگی میں مانع ہونا بھی حق ہے ۔ کہا جاتا ہے کہ دنیا قوت کی پابند ہے ، لیکن عقل اس امر پر راضی نہیں ہوتی ۔ قوت حق میں ہے اور یہ حقیقت آہستہ آہستہ نمایاں ہو کر رہے گی اور دل تلوار کی جگہ لے کر رہے گا ۔ علم وادب سے بھرپور شخصیت عیش شجاع آبادی کے احسانات اس قدر ہیں اس شہر پر کہ ان کے ادبی قرض کی ادائیگی کسی طور پر ممکن نہیں ہے اردو زبان و ادب کی خدمت کا عمل اور شعرو تشخص محفلوں کا وقار ان کے دم سے تھا ۔ا س شہر کی فضا ہمیشہ عیش کو یاد رکھے گی ۔

”دو عالم سے کرتی بیگانہ دل کو

عجب چیز ہے لذتِ آشنائی “

شہر شہر کی خبریں

الخدمت کے43واٹر فلٹریشن پلانٹس سے یومیہ 46ہزارافراد کو پانی کی فراہمی

  کراچی ( نمائندہ رنگ نو )الخدمت کراچی کی جانب سے شہریوں کو صاف اور پینے کے معیاری پانی کے

... مزید پڑھیے

کراچی پریس کلب کی 63سالہ جمہوری روایات قابل تقلید ہیں :محمود حامد

کراچی (نمائندہ رنگ نو ) آل پاکستان آرگنائزیشن آف اسمال ٹریڈرز اینڈ کاٹیج انڈسٹریز کراچی کے صدر محمود

... مزید پڑھیے

الخدمت کے تحت یتیم بچوں کی ہیلتھ اسکریننگ کا پانچواں مرحلہ مکمل

  کراچی ( نمائندہ رنگ نو ڈاٹ کام)الخدمت کراچی کے” آرفن کیئر پروگرام “کے تحت رجسٹرڈ

... مزید پڑھیے

تعلیم

ملک بھر میں تعلیمی ادارے تقریبا 2ماہ بعد دوبارہ کھل گئے (تعلیم)

اسلام آباد ( ویب ڈیسک )ملک بھر میں کورونا وائرس کی دوسری لہر کی وجہ سے دوسری مرتبہ بند ہونے

... مزید پڑھیے

وفاقی نظامت تعلیمات : اسکولوں کے اوقات کار کا نوٹیفکیشن جاری (تعلیم)

اسلام آباد(تعلیم ڈیسک) وفاقی نظامت تعلیمات نے اسکولوں کے اوقات کار کا نوٹیفکیشن جاری کر دیا ہے۔ ہفتہ کے

... مزید پڑھیے

سندھ کے میڈیکل کالجز ویونیورسٹیز میں داخلے سے محروم طلبا کیساتھ زیادتیوں کیخلاف مظاہر ہ (تعلیم)

کراچی(تعلیم ڈیسک) امیر جماعت اسلامی کراچی حافظ نعیم الرحمن نے سندھ کے میڈیکل

... مزید پڑھیے

کھیل

پی ایس ایل 6کی میزبانی لاہور اور کراچی کو دینے کا حتمی فیصلہ

لاہور( اسپورٹس ڈیسک )لاہور کا قذافی سٹیڈیم اور کراچی کا نیشنل سٹیڈیم 20 فروری سے پاکستان سپر لیگ (پی

... مزید پڑھیے

قائد اعظم ٹرافی فرسٹ الیون کاآخری راﺅنڈ مکمل

لاہور(اسپورٹس ڈیسک) اسٹیٹ بینک اسٹیڈیم میں قائد اعظم ٹرافی فرسٹ الیون کے دسویں

... مزید پڑھیے

پہلا ٹیسٹ، پاکستانی ٹیم دوسری اننگز میں بھی مشکلات کاشکار

ماﺅنٹ منگوئی(اسپورٹس ڈیسک )پاکستان اور نیوزی لینڈ کے درمیان کھیلے جانے والے پہلے

... مزید پڑھیے

تجارت

ملک میں ایک ہفتے کے دوران 23 اشیائے ضروریہ کی قیمتوں اضافہ

اسلام آباد(ویب ڈیسک )ملک میں ایک ہفتے کے دوران 23 اشیائے ضروریہ کی قیمتوں اضافہ ہوا

... مزید پڑھیے

گھی کے بعد کوکنگ آئل کی قیمت میں 29 روپے فی لیٹر اضافہ ہوگیا

لاہور (ویب ڈیسک ) گھی اور کوکنگ آئل تیار کرنے والی کمپنیوں نے اپنی مصنوعات کی قیمتوں میں مزید اضافہ کردیا

... مزید پڑھیے

فی تولہ سونا ایک لاکھ 10 ہزار 350 روپے کا ہوگیا

کراچی( رنگ نو ڈاٹ کام )پاکستان  بھر میں کاروباری ہفتے کے اختتام پر

... مزید پڑھیے

دنیا بھرسے

دنیا بھر میں کورونا وائرس سے ہلاکتیں 1835389ہو گئیں

نیویارک ، نئی دہلی ، ماسکو ،انقرہ(ویب ڈیسک)مہلک وبا کورونا وائرس کے باعث دنیا بھر میں

... مزید پڑھیے

کورونا کی وبا سنگین ،مستقبل کے امراض بدترین ہوسکتے ہیں، ڈبلیو ایچ او

جنیوا(ویب ڈیسک ،خبر ایجنسی)نوول کورونا وائرس نے دنیا بھر میں تباہی مچائی ہے مگر

... مزید پڑھیے

بالغ عورت پسند کی شادی اورمذہب تبدیل کرنے میں بااختیار ہے ، بھارتی عدالت

کلکتہ(ویب ڈیسک ،خبر ایجنسی) کلکتہ ہائی کورٹ نے کہا ہے کہ بالغ عورت اپنی پسند کی

... مزید پڑھیے

فن و فنکار

کام کے دباﺅ نے فیملی کے کئی خوبصورت احساس چھین لئے : مہوش حیات

لاہور (شوبز ڈیسک) اداکارہ مہوش حیات نے کام کے دباو نے ان سے فیملی کے کئی خوبصورت احساس چھین لئے

... مزید پڑھیے

حرامانی فیشن ڈیزائنر عاصم جوفا کی نئی کلیکشن کی تشہیری مہم کا حصہ

لاہور (شوبز ڈیسک) اداکارہ حرامانی فیشن ڈیزائنر عاصم جوفا کی نئی کلیکشن انارا کی تشہیری مہم کا حصہ بن

... مزید پڑھیے

زندگی بہت حسین ہے اس کی قدر کریں،اداکارہ صبا قمر

اسلام آباد (ویب ڈیسک )اداکارہ صبا قمر نے کہا ہے کہ زندگی بہت حسین ہے اس کی قدر کریں۔

... مزید پڑھیے

دسترخوان

اسپائسی فش اسٹکس

قرة العین
اجزا
مچھلی کے فلے۔۔ 500 گرام

... مزید پڑھیے

کوفتہ ہرا مصالہ پلاﺅ

انتخاب:امِ سعد

:اجزاءکوفتہ کیلئے

... مزید پڑھیے

بلاگ

مفتی قوی پھر ٹریپ ہوگئے (زین صدیقی)

زین صدیقی

میں جانتا ہوں مفتی عبدالقوی صاحب کا گھرانہ دین دار ہے۔ان کے چچا مفتی پیر عبد الراق قدوسی سے ایک عرصے تک میرے

... مزید پڑھیے

”تیر ی خودی میں اگر انقلاب ہو پیدا“ (بلاک)

ڈاکٹر طارق شہزاد تبسم،شجاع آباد

آپ سب کو معلوم ہے کہ دنیا کے نقشے پر پاکستان ہی وہ واحد مملکت ہے جو اسلام کے نام پر ، اسلام کی خاطر

... مزید پڑھیے

الخدمت کی سنہری خدمات (زین صدیقی)

زین صدیقی

ملک کو 2005 میں زلزلہ جیسی قدرتی آفت کا سامنا تھا توالخدمت نے بڑھ چڑھ کر کام کیا ۔متاثرہ علاقوں

... مزید پڑھیے