المیہ شام اور بشار الاسد

احسن اختر

سالوں تک خانہ جنگی، افراتفری اورہلاکت خیزی کا  سامنا کرنے کےبعد اب شام نسبتاًسکون میں ہے۔گو اب بھی روس

ایران،اورحزب اللہ کے مسلح فوجی ملک میں موجود ہیں۔ شام،اسرائیل سرحد پر پاسداران کے جنگجوؤں کے ٹھکانوں پر اور شامی فوجی اڈوں پر اسرائیلی حملےاب بھی عام سی بات ہے۔

روس سے ملنے والاجدید اینٹی میزائل پروگرام ، شامی دفاع میں ہمہ وقت کامیابی سے مدد دیتا اور نقصانات سے بچنے میں معاون ثابت ہوتا ہے۔دنیا اب تک حیران ہے کہ شام اب تک اپنی جغرافیائی سرحدوں کے تحفظ میں کیسےکامیاب رہااور کیسے بشار الاسد نے اتنی مخالفتوں کے بعد اب تک اپنے اقتدار کی حفاظت کی۔

صدر حافظ الاسد کے بعد " سیریا"(شام) کی صدارت پر ان کےبیٹے " بشار الاسد " فائز ہوئےاعلیٰ تعلیم یافتہ اورملک، خطے اورعالمی طاقتوں کے لیےنسبتاً قابل قبول ہے ،جب وہ صدر بنےتو" فرانسیسی صدر یاک شیراک"  نے ان کو فرانس کےاعلیٰ تر ایوارڈ"۔ "  پیش کیا ۔یہ ایوارڈ ان شخصیات کو دیا جاتاجن کی فرانس یا انسانی حقوق کے لیے کوئی  سرگرمی ہوتی، گو اس ایوارڈ کو بشار نے بعد میں فرانس کی امریکہ کے ساتھ مل کر  ملک میں حملے کے بعد یہ کہ کر واپس کیا کہ" میں ایک امریکی غلام ملک کا ایوارڈ اپنے پاس نہیں رکھنا چاہتا"بشار الاسد علوی شیعہ خاندان سےاور ان کی اہلیہ اسماء عیسائی خاندان سےتعلق رکھتی ہیں۔ ملک شام کی مشرق وسطی میں سب سے زیادہ اہمیت ہے، کیونکہ  سرحدی لحاظ سے اسرائیل سے جڑا ہوا ہے۔

عرب اسرائیل جنگ میں اسرائیل نے اسٹریٹجک لحاظ سےاہمیت کی حامل علاقے " گولان "پر قبضہ کر لیا تھا جو عربوں کی کمزوری اور نااتفاقی کی وجہ سے اب تک مستحکم ہے! اقوام متحدہ کی " کشمیر" اور فلسطین کی طرح واضح قراردادوں کے باوجود اسرائیل اپنا قبضہ ختم نہیں کرتا بلکہ اب امریکہ کی آشیر باد سے اس کو یہودیانے کے لیے اس پرآبادیاں بھی بسائی جا رہی ہیں۔سابق امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے اسرائیل  کا دورہ کیا اور"دیوار گریہ" پر حاضری دی اور گولان کی پہاڑیوں کو اسرائیل کا حصہ قرار دینے کا اظہار کیا۔

ملک شام کو قدرت نے جغرافیائی خوبصورتی سے بھی نوازا اور معدنی دولت تیل سے بھی نوازا ، گو ریجن کے اور ممالک سے اس کے زخائر کم تھے لیکن ملکی معیشت کا زیادہ تر دارومدار اس کی آ مدنی پر ہی تھا!

عرب بہار کے نام سے تیونس سے مظاہرے شروع ہوئے جو دیکھتے ہی دیکھتےپورےمشرق وسطی کے" ہراس ملک میں" پھیلتے چلے گئے جو اسرائیل کے زرا بھی" خلاف"تھے۔مثلاً سعودی عرب اورامارات جیسی شاہی مملکتیں اس سے متاثرنہ ہوئیں ، کیونکہ سعودی عرب درپردہ اور امارات کھل کر اسرائیلی مفادات کا خطے میں تحفظ کرتا ہے۔

مصر میں اخوان کی حکومت ختم کر کےعیسائی خاتون کےبیٹے"جنرل سیسی " حکومت میں لائےگئے! یہ ایک غیر آئینی اقدام تھا کے منتخب حکومت اورعہدے داروں کوپابند سلاسل کیا گیا ،احتجاج کرنے والوں کو قتل کیا گیا، قتل سے بچ جانے والوں کو کینگرو عدالتوں میں سزا سنا کر احتجاج کے جرم میں پھانسی تک سنا دی گئی!

جرنل سیسی اپنے اقتدار سے اب تک امریکہ سے سب سےزیادہ امداد لینےوالے ملک کے صدر ہیں۔

یمن کی جنگ میں سعودی و امارتی اتحاد کےاہم ساتھی!سعودی اور اماراتی راجواڑوں کے اہم "ڈارلنگ!" مصر اور اسرائیل کی سرحد " رفاہ کراسنگ " کے زریعے آ پس میں ملتی ہے جرنل سیسی کی آ مد سے اسرائیل خوش ہے کہ فلسطینیوں کو اس طرف سے کوئی مدد ملنا  اب ممکن نہیں رہا جیسا اخوان کے دور میں جاری ہوا تھا۔مصر اسرائیل کے درمیان خفیہ سرنگوں کو اسرائیل نے کامیابی کے ساتھ منہدم کر دیا، سمندری ناکہ بندی اس کے علاوہ ہے۔یعنی اسرائیل کے لئیےاب  یہاں چین ہی چین ہے۔ شام میں  بحران چند اسکول کے بچوں کے مظاہروں سے شروع ہوا۔

پورے شہر میں اسکولوں کی دیواروں پر بشار الاسد کے خلاف نعرے درج کئےگئے۔حکومت پر الزام ہے کہ اس نے سختی کے ساتھ اس تحریک کو روکا اور اس میں حصہ لینے والوں پر ناروا مظالم کیے۔ رفتہ ر فتہ اس تحریک کا دائرہ وسیع تر ہوتا چلا گیا!یہاں تک کہ شامی فوج کا کچھ حصہ بھی حکومت سے الگ ہوکر بشار الاسد کا تختہ الٹنے کی جنگ میں شریک ہو گیا۔

شام کثیر الثقافتی اور مزہبی ملک ہے یہاں طلوع اسلام سے بھی پہلے یہود ،عیسائی اور دیگر قومیں آ باد تھیں ،طلوع اسلام کے بعد بھی سب ہی آ باد تھے ۔لیکن اب پوری اسلامی دنیا میں فرقہ وارانہ منافقت کو فروغ دیا گیا اور تختہ مشق ملک شام تھا۔

یہ پروپیگنڈا کیا گیا کہ علوی شیعہ صدر بشار سنی اکثریتی علاقوں میں مظالم کر رہا ہے۔

مظالم تک بات درست تھی، لیکن یہ ہرگز شیعہ ،سنی چکرنہ تھا، اگر بشار سنی ہوتا یا اس کی جگہ کوئی بھی ہوتا تو وہ اپنا اقتدار بچانے کے لئیے یہی کرتا۔ جیسے سعودی عرب میں بھی حکومت کے خلاف کوئی بڑے سے بڑاعالم دین بھی لب کھولے تو چند منٹ بعد صفحہ ہستی سے مٹ جاتا ہے۔

عدنان خشوگی کی مثال سامنے ہے کہ اس کی لاش کے ٹکڑے تک نہ مل پائے۔مصر کی مثال سامنے ہے کہ منتخب وزیراعظم جیل میں علاج نہ ہونے سے جاں بحق ہوا۔امریکہ ،سعودی عرب ،امارات نے اپنے سرمائے کا رخ شام کی طرف کر دیا!ترکی بھی اس ڈرامے میں اپنا کردار کرنے کے لئے میدان میں تھا۔

شامی سرحدوں کے چاروں جانب تربیتی کیمپ شروع تھے جہاں ایک المیہ کی تیاری شروع تھی۔ داعش نام سے ایک نیا گروپ ترتیب دیا جا رہا تھا۔امریکی و یوروپی سیٹیلائٹ اس کو دیکھنے سے قاصر تھے۔عرب دنیا کا بہترین ملک " عراق" جل چکا تھا۔

عراق پرٓبھی پرجھوٹے الزام لگایے گئے کہ اس کے پاس کیمیاوی ہتھیاروں کے ذخائر ہیں اس کے پرامن ایٹمی پروگرام کو ختم کرایا گیا۔۔اس آ گ کا رخ شام کی طرف کرنا مقصود تھا۔کیونکہ شام کی کمزوری اس کے تیل پر قبضہ اور اسرائیل کے لئیے خروج کے وقت با آ سانی راستہ ہی "ہدف اول "تھا۔اب عراق کے بعد داعش شام پہنچ گئی "حالانکہ سعودیہ بھی ایک جانب اور مشرق وسطی کے اور بھی کمزور امیر ممالک بھی اردگرد ہی تھے، جو داعش کے لئے چند دنوں کی مار تھے۔ عجب بات یہ تھی جو ریکارڈ پر ہے کہ شامی فوج سے جنگ میں زخمی ہونے والے " داعشی " علاج" تل ابیب" میں کراتے  نظر آ ئے۔

فوج کا بڑا حصہ ٹوٹ کر" سیرین عرب آرمی" بنا بیٹھا اور ایک تہائی علاقے پر قبضہ کر لیا۔اس کو اسلحہ وسائل کہاں سے ملے یہ بھی ایک سوال تھا۔ترکی و شام کی سرحد پر بسے کرد بھی اٹھ کھڑے ہوئے،دو جماعتیں ترتیب دی گئیں ایک امریکہ کے ساتھ دوسری ترکی کے ساتھ یہ علاقے تیل کی دولت سے مالا مال تھے اصل کھیل یہیں ترتیب دیا گیا، شامی فوج کو بے دخل کر کےامریکی فوج نے جلد ہی قبضہ کیا۔اب تیل کی آمدن بظاہر  کردوں  کو لیکن درپردہ  امریکہ کی جیب میں جانے لگی۔داعش بھی اپنی اطراف کے تیل کی دولت سے مالامال کنوؤں پر قابض تھی یہ بھی دولت سمیٹنے میں اتنی مشغول ہوئی کہ سعودیہ و امارات ،و کویت کو بھول گیا۔اب برطانیہ، فرانس اور اٹلی بھی میدان میں تھے ، ملک میں سوسے زیادہ  چھوٹے بڑے ملٹری گروہ ترتیب دئیے جا چکے تھے ، سب آ پس  میں بھی دست وگریباں اورشامی حکومت سے بھی ۔اقوام متحدہ ، امریکی واسرائیلی زبان بولتی ملک کے صدر بشار الاسد کو اقتدار چھوڑنے کے مطالبے کرتی اور ملک میں تقریباً سترفیصد علاقے پر مختلف الخیال گروپ قابض تھے۔امریکہ ،فرانس ،اٹلی سمیت تمام عیسائی اور مسلمان سعودی عرب ،الامارات ، کویت، ترکی سب ہم آ واز۔۔۔۔مطالبہ ایک ہی تھا بشار الاسد اقتدار چھوڑے۔

یہاں سوال یہی تھا کہ اگر سعودی عرب پر جیسا بھی نظام ہے! اگر وہاں پر شام کی طرح کے حالات پیدا کئے جائیں اور پھر ریاض ، مکہ و مدینے پر مختلف گروہ قابض ہو جاتے ہیں، قبضہ کے بعد ان کا یہ کہنا ہوتا ہےکہ شاہ سلمان استعفٰی دیں۔

تو ہم کس کی سپورٹ کریں گے، کیا لیبیا کی طرح اس کو لاوارث کر دیا جائے کہ دو حکومتیں چل رہی ہیں ، صدر معمرالقذافی کے دور  کا تابندہ ستارہ " لیبیا" اب کھنڈر بنا ہے یا اگر امریکہ میں روس کی مدد سے ڈونلڈ ٹرمپ کے حامی اٹھیں اور چند شہروں پر قبضہ کر لیں  کہ ہم نئی حکومت کو نٹ مانتے وہ اقتدار چھوڑے، مسلمان سعودیہ کی مدد سے کسی شہر پر قبضہ کر کے کہیں کہ  ہم یہاں اسلامی نظام نافذ کر رہے ہیں!کالے بھی ہتھیار اٹھا کر اپنے جائز حقوق کے لئے شہروں پر قبضہ کر لیں کہ ہم تو اب تمہارے ساتھ نہیں رہتے۔امریکی حکومت کیا کرے گی ؟

اب دنیا بھر سے سلفی وتکفیری داعش کے پرچم تلےاورپاکستان افغانستان و ایران کے شیعہ نوجوان اصائب حق و پاسداران انقلاب کے پرچم تلے نبرد آزما تھے۔اسلامی دنیا کے دونوں اطراف کے میڈیا و دانشور اپنے اپنے مسلک کے نوجوانوں اور گروہوں کے طرف دار،یہودی میڈیا اس آ گ میں ہوا جھلتا ۔بار ہا شامی افواج پر الزام عائد ہوئے کہ اس کی جانب سے ،" کیمیاوی ہتھیاروں" سے حملے ہوئے۔ہر کچھ دنوں بعد رپورٹ اور تصاویر نشر ہوتیں جس میں  بچوں کی بری حالت دکھائی جاتی ، اور خبر یہ بنتی کہ " دمشق کے مضافات میں " ڈوما" کے علاقے میں شامی فوج کا فضائی حملہ اس حملے میں کیمیاوی ہتھیار استعمال ہوئے، جس سے چالیس بچےاور خواتین جاں بحق ہوئیں۔

حکومت اس حملےسے لاکھ انکار کرتی ،لیکن میڈیاایک ہی موقف اپناتا کہ یہ حملہ فوج نے ہی کیا۔

 انیس سوستر میں امریکی وزیر خارجہ نے چینی صدر کو ایک تصویر پیش کی جس میں وہ اپنے لان میں بیٹھے اپنی اہلیہ کے ساتھ چائے پی رہے تھے!.لیکن شام میں شاید امریکی سیٹیلائٹ 2017 |2018 میں بھی کام نہیں کرتا رہا ۔بالکل اسی طرح عراق میں پانچ سال پابندی لگائی کہ تمہارے پاس کیمیاوی و ایٹمی ہتھیار ہیں اس لیے ہم پابندی لگائیں گے اور تمہارے لاکھوں بچوں کو مرنا ہوگا، سیٹیلائٹ کام نہیں کیا ،کوئی ہتھیار اور کوئی فیکٹری نظر نہ آ ئی، ملک برباد ہوا ،صدام کو پھانسی دلوائی اور بعد میں برطانوی وزیراعظم فرماتے ہیں کہ کوئی ہتھیار نہ تھا۔۔

روسی وزیر خارجہ سرگئی لاروف نےکسی ملک کا نام لiے بغیر بیان دیا کہ کیمیائی حملےمیں ایک ملک کی خفیہ ایجنسی کا ہاتھ ہے ، ہمارے تحقیقاتی ادارے ثبوت حاصل کر چکے ہیں۔میں یقین رکھتا ہوں کہ کیمیائی حملے میں اسرائیل کا ہی ہاتھ ہو سکتا ہے جب ہی سرگئی لاروف اس سلسلے میں ملک کا نام کھل کر نہ لےسکے۔بالکل اسی طرح جیسےامریکی صدر جیسی شخصیت بھی " ہولو کاسٹ" کا انکار نہیں کر سکتی۔

پوری دنیا میں جو یہود اوراسرائیل کہےوہی سچ سمجھا جاتا ہے ، یہ عام سی بات ہے۔لاتعداد افراد کی ہلاکتوں ، ملکی انفرا اسٹریکچر  کی تباہی کے بعدروس اور ایران کی مدد سے اب بشار اپنے ملک کے 85 فی صد پر قابض ہیں ، داعش بھی تقریبآ نمٹ چکی

بشار نےانتخابات بھی کرالیےجس میں دیگر عرب ممالک کی طرح وہ 95 فی صدووٹ لےکردوبارہ صدر بن گئے۔(ہمارے ملک میں بھی جرنل ضیاء اسلام چاہئیے یا نہیں چاہئیے کا ریفرینڈم کرا کے صدر بن گئے تھے)عالمی میڈیا انتخابات کے خلاف بشار مخالف مظاہروں کی ویڈیوز نشر کرتا لیکن دوسری طرف اس کی حمایت میں مظاہرے سے سرف نظر کرتا رہا !

بالکل اسی طرح علوی شیعہ فرقے کے فوجیوں کی بشار کی تصویر کو سجدہ کرتی تصویر خوب وائرل ہوئی یہ ان کے فرقہ میں ہمارے آ غا خانی شیعہ فرقے کی طرح کوئی بری بات نہیں!

لیکن ایسی تصاریر جن میں شیعہ اور سنی دونوں مسلکوں کے فوجی ایک ساتھ نماز پڑھتے نظر آ ئیں اس کو ڈیلیٹ مار دیا جاتا ، ایسی تصاویر اور ویڈیو جس میں بشار خود  سنی امام کی اقتدا میں نماز پڑھ رہا ہو اس کو دبا دیا جاتا رہا۔

اب خیمے میں اونٹ گھس بیٹھا ہے وہ ہے ایران اور روس ان دوممالک کے اپنے اپنے اہداف اورمقاصد ہیں۔شام کا مفاد اپنا ! بشار نے ان دونوں ممالک کی اور لبنان کی حزب اللہ کی مدد سے اپنے اقتدار اور ملک کی سرحدوں کو بچایا ہے، اس نے اس کی قیمت بھی چکانی ہے،جو ہر ماہ اسرائیلی فضائی حملوں کی صورت میں ملک کو بھگتنا پڑ رہے ہیں ، حالیہ فضائی کارروائی میں دمشق ائرپورٹ کو بہت نقصان پہنچا۔زیر نظر تحریر سے یہ تاثر ہر گز نہ لیا جائے کہ بشار الاسد دودھ کا دھلا ہوا ہے، اس کے کوئی جرائم نہیں! یقیناً اس کی غلطیاں بھی ہوں گی۔معاملے کو مغربی میڈیا کے نہیں بلکہ اپنی عینک سے دیکھیں تو صورتحال یہ نظر آ تی ہے کہ اسرائیل کی سرحد  ان کی پارلیمان میں " مدینہ منورہ" تک دکھائی گئی ہے۔یقیناً پوراشام اس میں شامل کرنا ان کا اہم مقصد ہے، گزشتہ بائیس سال میں صدی کے اوائل سے یہود اپنی سازشوں میں اور زیادہ سرگرم ہو چلے۔انہوں نے لیبیا کا بیڑہ غرق کردیا ، وہ ملک جہاں عرب و افریقہ کے سب سے زیادہ پی ایچ ڈی تیار ہوتے ، تعلیم فری،  سہولیات میں سب سےآ گے تھا اب معمر قذافی کے بعد اپنے جغرافیہ کی حفاظت نہ کر پا رہا! عملاً دو ملکوں میں تقسیم ہو چکا ، الگ الگ حکومتوں میں۔عراق جو اپنی بے مثال فوج ، کی مدد سے اسرائیل کی راہ میں اہم رکاوٹ تھا اب شیعہ اکثریتی فرقے کی حکومت میں تبدیل ہے اور بے وزن۔

صدام حسین سنی تھا لیکن شیعہ بھی اس کے ساتھ تھے ذور ایران عراق جنگ میں شیعہ عراقی فوجی بھی ملک کے لئیے شیعہ ایران کے خلاف لڑے،اب بھی آ یت اللہ سیستانی، اور مقتدیٰ الصدر جیسے شیعہ فرقے کے عراقی رہنما ایران کے خلاف ہیں۔لیکن یہ ماننا پڑے گا صدام حسین جیسا بھی تھا لیکن عراق کی ترقی، وحدانیت اور مستقبل کے لئیے ضروری تھا۔شام یہود کے ایڈوانس کی راہ میں اسلام کا ابتدائی مورچہ ہے، اس کو شیعہ سنی فرقہ کی عینک سے دیکھنے کی ضرورت نہیں( گو ہم نے دیکھا) ریکارڈ ہے شامی بحران سے پہلے تک یہود کے خلاف فلسطینیوں کی تحریک" حماس" کے سربراہ " خالد المشعل" دمشق میں ہی موجود تھے اور وہاں سے ہی اپنی جماعت کی قیادت کرتے رہے جس نے شامی بحران سے پہلے تک اسرائیل کو کامیابی سے ناکوں چنے چبوائے۔

یہ شام ہی تھا جس کی مدد سے حزب اللہ نے لبنان میں حافظ الاسد کے دورمیں اسرائیل کو شکست دی اوراپنا علاقے کو آ زاد کرایا ، یہ عربوں کی اسرائیل کے خلاف واحد فوجی فتح ہے.دوسرے ممالک کا شام کی حدود میں زبردستی اپنے فوجی اتار کر قبضہ کر لینا ، وہاں پہنچ کر اپنی ملیشیا ئیں بنانا ، شام کے وسائل پر قبضہ کرنا، شام کے المیے کی بنیاد ہے.پوری اسلامی دنیا کا ہر ملک عالم اسلام کا مورچہ ہے، شیعہ سنی وہابی کچھ نہیں صرف اور صرف کلمہ اور حرم دشمن کا ہدف ہے۔

اپنی سوچ اورزاویہ نگاہ کو بدلنےکی ضرورت اور اتحاد کےرستہ پرچلنےکی ضرورت ہے۔

نہیں تو دشمن اب تک تقسیم در تقسیم کی سازش میں کامیاب نظر آ رہا ہے.

 

نوٹ : ایڈیٹر کا بلاگرکے خیالات سے متفق ہونا ضروری نہیں ( ادارہ رنگ نو)

شہر شہر کی خبریں

الخدمت کو جعفر برارز کی جانب سے فیومیگیشن مشین اور دوا کا عطیہ

 کراچی ( نمائندہ رنگ نو )الخدمت کراچی کوجعفر برادرزپرائیویٹ لمیٹڈ کراچی اورسیلاب سےمتاثرہ علاقوں میں ڈینگی کے تیزی سے پھیلاؤ کے پیش نظر

... مزید پڑھیے

غربت کے ستائے یہ لوگ

تصویر کہاںی /صباحت شمیم

پاکستان  کواسلام کا قلعہ کہا جاتا ہے،یہ بڑےاعزازکی بات ہے ۔اس اعتبارسے یہاں کاریاستی نظام سیدناعمر بن خطاب رضہ جیسا ہونا چاہیےتھا ،لیکن افسوس

... مزید پڑھیے

جماعت اسلامی حلقہء خواتین ضلع اسلام آباد کے تحت "بدلتی اقدار اورہمارے رویے" کے عنوان سے پروگرام

اسلام آباد (رپورٹ: حریم شفیق  ) جماعت اسلامی حلقہء خواتین ضلع اسلام آباد کےتحت ٹرانس جینڈر ایکٹ کے خلاف"بدلتی اقدار اورہمارے رویے "کے

... مزید پڑھیے

تعلیم

کراچی بورڈ :دہم جماعت سائنس گروپ کی مارکس شیٹ 5اکتوبر سے جاری ہوں گی (تعلیم)

کراچی ( تعلیم ڈیسک )ثانوی تعلیمی بورڈ کراچی نےدہم جماعت سائنس گروپ کی مارکس شیٹ 5اکتوبر بروز بدھ سے جاری کرنے کا اعلان کیا ہے، جبکہ ماہ

... مزید پڑھیے

جامعہ کراچی،137 طلباوطالبات کو ایم فل،پی ایچ ڈیو ڈگریاں تفویض (تعلیم)

کراچی(تعلیم ڈیسک)جامعہ کراچی کے وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹرخالد محمودعراقی کی زیر صدارت منعقدہ ایڈوانسڈ اسٹڈیز اینڈریسرچ بورڈ (اے ایس آربی )کے

... مزید پڑھیے

جماعت نہم کے سالانہ امتحانات کےلئے انرولمنٹ کارڈ جاری کرنے کا اعلان (تعلیم)

کراچی (تعلیم ڈیسک)ثانوی تعلیمی بورڈ کراچی نے سالانہ امتحانات سال 2022ء(جماعت نہم) سائنس وجنرل گروپ ریگولرکے انرولمنٹ کارڈ جاری کرنے کا

... مزید پڑھیے

کھیل

ویمنز ایشیا کپ ٹی 20 :پاکستان نے بنگلہ دیش کو 9 وکٹوں سےشکست دیدی

سلہٹ (اسپورٹس ڈیسک)ویمنز ایشیا کپ ٹی 20 میں پاکستان نے اپنے دوسرے میچ میں بنگلہ دیش کو باآسانی 9 وکٹوں سے شکست دے دی۔

... مزید پڑھیے

قومی کرکٹ ٹیم سہ فریقی سیریز میں شرکت کیلئے نیوزی لینڈ روانہ ہوگئی

لاہور (اسپورٹس ڈیسک،فوٹو فائل )پاکستان کرکٹ ٹیم غیر ملکی پرواز کے زریعے سہ فریقی سیریز میں شرکت کیلئے نیوزی لینڈ روانہ ہوگئی۔

... مزید پڑھیے

قومی ہیرو عثمان وزیر ورلڈ یوتھ ٹائٹل جیتنے والے پہلے پاکستانی باکسر بن گئے

بنکاک (اسپورٹس ڈیسک)پاکستان کےلئے اعزاز، باکسرعثمان وزیر نے ورلڈیوتھ ٹائٹل جیت لیا۔پاکستان کے عثمان وزیر نے ورلڈ یوتھ باکسنگ ٹائٹل اپنے نام

... مزید پڑھیے

تجارت

ملک بھر میں مہنگائی کی شرح 40 فیصد سے بڑھ گئی

اسلام آباد (ویب ڈیسک)ملک بھر میں مہنگائی کی شرح 40.70فیصدسے تجاوز کر گئی۔وفاقی ادارہ شماریات کی جانب

... مزید پڑھیے

کراچی:آٹے کے نرخوں میں ہوشربا اضافہ، قیمت 135 روپے کلو تک پہنچ گئی

کراچی(ویب ڈیسک)آٹے کے نرخوں میں ہوشربا اضافہ، قیمت 135 روپے کلو تک پہنچ گئی۔ قیمت کنٹرول کرنے کے

... مزید پڑھیے

کے الیکٹرک صارفین کیلئے بجلی 4 روپے 12 پیسے سستی،نوٹیفکیشن جاری

اسلام آباد(ویب ڈیسک)کراچی کے عوام کےلئے خوش خبری، کے الیکٹرک کے صارفین کے لیے بجلی 4 روپے 12

... مزید پڑھیے

دنیا بھرسے

عالم اسلام کے معروف مبلغ شیخ یوسف القرضاوی جہان فانی سے کوچ کرگئے

دوحہ(ویب ڈیسک)معروف مذہبی مبلغ اور ممتاز عالم دین علامہ یوسف القرضاوی علالت کے بعد 96 سال کی عمر میں انتقال کرگئے۔

... مزید پڑھیے

او آئی سی کی پاکستان میں سیلاب سے متاثرہ افراد کیلئے فوری امدادکی اپیل

 

اسلام آباد (ویب ڈیسک)اسلامی تعاون کی تنظیم (اوآئی سی)نے پاکستان میں سیلاب سے متاثرہ افراد کی امدادکیلئے

... مزید پڑھیے

دہشت گردی کا مقدمہ:عمران خان پر لگائے الزامات سے آگاہ ہیں:اقوام متحدہ

نیویارک(ویب ڈیسک) اقوام متحدہ نے عمران خان پر دہشت گردی کے مقدمے کے بارے میں کہا ہے کہ سابق وزیر

... مزید پڑھیے

فن و فنکار

اداکارہ سارہ خان کی سادگی نے مداحوں کو اپنے سحر میں جکڑ لیا

کراچی (شوبز ڈیسک) معروف اداکارہ سارہ خان کی سادگی نے مداحوں کو اپنے سحر میں جکڑ لیا ۔ حال ہی میں سارہ خان نے سوشل میڈیا کی فوٹو اور ویڈیو

... مزید پڑھیے

ایف آئی اے تحقیقات :متنازع ٹک ٹاکر حریم شاہ کی حفاظتی ضمانت منظور

کراچی (شوبز ڈیسک) سندھ ہائی کورٹ کی جانب سے متنازع ٹک ٹاکر حریم شاہ کی سات روز کے لیے حفاظتی ضمانت منظور کر لی گئی ہے۔

... مزید پڑھیے

بیٹے کو ایوارڈ ملنے پر اداکارنعمان اعجازکڑی تنقید کی زد میں آگئے

لاہور ( شوبز ڈیسک) داکار نعمان اعجاز کے بیٹے زاویار نعمان کو حال ہی میں کینیڈا میں منعقد ہونے والے ایوارڈز شو میں بیسٹ سینسیشن کا ایوارڈ ملا تو

... مزید پڑھیے

دسترخوان

ساون کے پکوان(پٹاٹو بالز)

 آسیہ محمد عثمان

اجزا

آلو۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔دو عدد بڑے

... مزید پڑھیے

عیدالاضحی اورکلیجی

نزہت ریاض

بقرعید ہواور کلیجی نہ پکے ایسا تو ہو ہی نہیں سکتا، بلکہ ہمارے گھروں کے مرد حضرات تو بقرعید کی صبح کچھ کھاتے ہی نہیں تاکہ کلیجی سےصحیح

... مزید پڑھیے

عیدالاضحیٰ پربیف روسٹ بنائیے

قرۃ العین 

عید الاضحیٰ پر ہرخاتون خانہ کی کوشش ہوتی ہےکہ وہ مزے دار پکوان سے اپنے گھروالوں کی تواضع کرے اور کچھ اچھا بنائے،عید الاضحی پر اسپیشل

... مزید پڑھیے

بلاگ

جیت کے لیے ضروری کیا ہے ؟ (بنتِ عبد المجيد )

بنت عبد المجيد

جیت کی جو ڈش ہےاس میں قابلیت، ذہانت اورسخت محنت ڈلتے ہیں لیکن اہم ترین چیزہےضد اور استقامت۔ یاد رکھیےکہ یہ دنیا ضدی لوگوں کونوازتی ہے

... مزید پڑھیے

آئینہ نبی میں آرائش کردار کر (نورالسحر)

نورالسحراظہار

ماہ ربیع الاول کا چاند کیا نکلا مبارک سلامت کی صداسےفضا گونج اٹھی۔۔۔سوئی محبت بیدارہوئی کہ سال بھر کے چندایام ہی تو نبی مہربان کے نام ہونے

... مزید پڑھیے

وما ارسلنک الارحمتہ للعالمين (افروز عنایت)

افروزعنایت

جی ہاں انہیں اللہ رب الکریم نے نبی مہربان محمدصلی اللہ علیہ وسلم کو تمام جہانوں کے لیےرحمت بنا کربھیجا، سبحان الله اوراس رحمت للعالمین کا امتی

... مزید پڑھیے